’معائنہ کاروں کو شمالی کوریا آنے کی دعوت‘

جوہری توانائی کے لیے اقوامِ متحدہ کے نگران ادارے نے کہا ہے کہ شمالی کوریا نے اس کے معائنہ کاروں کو پیانگ یانگ آنے کی دعوت دی ہے۔

شمالی کوریا نے تین سال قبل اقوامِ متحدہ کے معائنہ کاروں کو اپنے ملک سے نکال دیا تھا۔

بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی (آئی اے ای اے) نے کہا ہے کہ اسے سولہ مارچ کو پیانگ یانگ کی جانب سے ایک خط موصول ہوا ہے تاہم اس دورے کی تفصیلات ابھی طے کی جا رہی ہیں۔

خبر رساں ادارے رائیٹرز نے آئی اے ای اے کی ترجمان گِل ٹیوڈر کے حوالے سے بتایا کہ ابھی اس بارے میں کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ ماضی میں شمالی کوریا کو اہم سائٹس تک محدود رسائی حاصل تھی۔

ویانا میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار بیتھنے بیل کا کہنا ہے کہ ابھی یہ واضح نہیں کہ آئی اے ای اے کے معائنہ کاروں کے لیے معائنہ کرنے کی کتنی گنجائش ہے۔

واضح رہے کہ شمالی کوریا نے گزشتہ ماہ یورینیم کی افزودگی کے ساتھ ساتھ جوہری اور دور تک مار کرنے والے میزائل ٹیسٹ کو بھی معطل کرنے پر اتفاق کیا تھا۔

امریکہ کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا نے اقوامِ متحدہ کے معائنہ کاروں کو بھی اپنے ملک آنے کی اجازت دینے پر اتفاق کیا۔

پیانگ یانگ کے اس فیصلے کے بعد واشنگٹن شمالی کوریا کو دو لاکھ چالیس ہزار ٹن غذائی امداد دینے کو حتمی شکل دے رہا ہے۔

واضح رہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے یہ اعلان کم جونگ آن کے اقتدار میں آنے کے تین ماہ کیا گیا ہے۔کم جونگ آن نے اپنے والد کم جونگ اِل کے مرنے کے بعد اقتدار سنبھالا تھا۔

شمالی کوریا کی جانب سے بین الاقوامی برادری کے ساتھ تعاون کے اعلان کو گزشتہ ہفتے اس وقت شک کی نگاہ سے دیکھا گیا جب پیانگ یانگ نے ایک مصنوعی سیارہ خلاء میں بھیجنے کا اعلان کیا۔

شمالی کوریا کا کہنا تھا کہ یہ منصوبہ بارہ سے سولہ اپریل کے دوران اس کے عظیم رہنما کم ال سنگ کی سوویں سالگرہ کے موقع پر شروع کیا جائے گا۔

امریکہ نے شمالی کوریا کے اس اعلان کو انتہائی اشتعال انگیز قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ ایسے کسی بھی منصوبے کو شروع کرنا اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہو گی۔

اسی بارے میں