سٹراس کان، جسم فروش گروہ سے تعلق کا الزام

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

فرانس میں عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کے سابق سربراہ ڈومینک سٹراس کان پر مبینہ طور پر جسم فروشی میں ملوث ایک گروہ سے تعلق کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

فرانس کے شہر للی میں میجسٹریٹ سٹراس کان سے باضابط تفتیش کر رہے ہیں۔

سٹراس کاہن نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ وہ ایسی محفلوں میں شریک ہوئے تھے جہاں حکام کو یقین ہے کہ ایک گروہ کی جانب سے جسم فروش خواتین مہیا کی جاتی تھیں تاہم سٹراس کان نے اس بات سے انکار کیا ہے کہ انھیں معلوم تھا کہ وہ جسم فروش خواتین ہیں۔

آئی ایم ایف کے سابق سربراہ گزشتہ سال مئی میں نیویارک کے ایک ہوٹل کی ملازمہ نفیساٹو ڈیالو سے جنسی زیادتی کی کوشش کے الزام کے بعد وہ اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے تھے، بعد میں اس الزام کو واپس لے لیا گیا تھا۔

ہوٹل کی ملازمہ نفیساٹو ڈیالو نے سٹراس کان کے خلاف سول کیس دائر کیا جو نیویارک میں بدھ سے شروع ہو رہا ہے۔ سٹراس کان ان الزامات کا سختی سے انکار کرتے ہیں۔

سٹراس کان کے ایک وکیل کا کہنا ہے کہ ’سٹراس کان پر جسم فروش خواتین کو حاصل کرنا اور ایک منظم گروہ سے تعلق کا ابتدائی الزام عائد کیا گیا ہے۔‘

سٹراس کان پر اگر الزام ثابت ہو جاتا ہے تو انھیں بیس سال تک قید ہو سکتی ہے۔

استغاثہ کا کہنا ہے کہ اس کیس کے سلسلے میں سٹراس کان گواہوں، مدعیان اور مدعا علیہ سے کسی قسم کا رابط نہیں کر سکتے ہیں۔

پیرس میں بی بی سی کی نامہ نگار کرسٹین فریسر کا کہنا ہے کہ سٹراس کان کا جس گروہ سے تعلق جوڑا جا رہا ہے، وہ نہ صرف للی بلکہ پیرس اور واشنگٹن میں بھی رقص و سرور کی محفلوں میں جسم فروش خواتین مہیا کرتا ہے۔

فرانس میں اس کیس کو ایک ہوٹل’ کارلٹن آفیئرز‘ کا نام دیا گیا ہے جہاں پر اس طرح کی رقص و سرور کی متعدد محفلیں منعقد ہوئیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP Getty Images
Image caption خزانہ ڈومینیک سٹراس کان نے ہوٹل کی ملازمہ پر جنسی حملہ کرنے کے الزام کی تردید کی تھی

میجسٹریٹ اس الزامات کی تحقیق کر رہے ہیں کہ سٹراس کان کے جسم فروش خواتین مہیا کرنے والے گروہ سے کاروباری تعلقات تھے اور انہوں نے کاروباری سرمایے کا غلط استعمال کیا۔

اس کیس میں ایک پولیس آفسر سمیت آٹھ افراد سے باضابط تفتیش جاری ہے۔

سٹراس کان کے ایک وکیل رچرڈ مالکا کا کہنا ہے کہ’ ان کے موکل نے سختی سے کہا ہے کہ وہ اس معاملے میں قصور وار نہیں ہیں اور ان کو قطعاً معلوم نہیں تھا کہ وہ جن خواتین سے مل رہے ہیں وہ جسم فروش ہو سکتی ہیں۔

ڈومینیک سٹراس کان فرانس کے سابق وزیرِ خزانہ اور فرانس کے ممتاز سوشلسٹ سیاست دان بھی ہیں جنہیں اس واقعے سے قبل ملک کی صدارت کے لیے ایک ممکنہ امیدوار کے طور پر دیکھا جا رہا تھا۔

اسی بارے میں