یمن: فضائی حملوں میں درجنوں شدت پسند ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

یمن میں حکام کا کہنا ہے کہ جنوبی پہاڑی علاقے میں سلسلہ وار فضائي حملے کیے گئے ہیں جن میں القاعدہ کے درجنوں مسلح افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

یمنی حکام نے امریکی خبر رساں ادرے اے پی کو بتایا کہ تین دن کے حملوں کے بعد سرکاری فورسز نے القا‏عدہ کے ٹھکانے الرہان کو اپنے قبضے میں لے لیا ہے۔

حکومت کے ایک فرد نے نام نہ بتانے کرنے کی شرط پر خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ صوبہ لحج میں کئی روز کی شیلنگ اور بمباری کے بعد اڑتیس شدت پسندوں کو ہلاک کیا گيا ہے۔

گزشتہ ہفتے شدت پسندوں نے فوج کی ایک قریبی چوکی پر حملہ کیا تھا جس کے بعد حکومت نے فضائی حملے کی کارروائی شروع کی تھی۔

فروری میں صدر عبدالّرب منصود ہادی کے عہدہ سنبھالنے کے بعد سے القاعدہ کے شدت پسندوں نے حملے اور تیز کر دیے ہیں۔

علی عبداللہ صالح کے اقتدار سے منتقلی کے بعد مسٹر ہادی نے کہا تھا کہ القا‏عدہ سے لڑنا ان کی ترجیحات میں شامل ہے۔

علی عبداللہ صالح کے اقتدار کے خلاف ایک برس سے جاری مظاہروں کے سبب شدت پسندوں کو اپنی کارروائي کے لیے موقع ملا ہوا تھا۔ وہ کافی دنوں سے فوج کے خلاف بر سرپیکار ہیں۔

اسی بارے میں