ٹیکسی پر سفر کا نیا عالمی ریکارڈ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اس سفر کے دوران تینوں دوست چار براعظموں اور پچاس ممالک سے گزرے

تین برطانوی دوستوں نے ٹیکسی پر طویل ترین سفر کا نیا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔

یہ اپنی بیس سال پرانی کالی ٹیکسی میں تینتالیس ہزار میل سے زائد کا سفر مکمل کرنے کے بعد جمعہ کو لندن کے کووونٹ گارڈن پہنچے ہیں۔

گلوسٹرشائر کے تئیس سالہ پال آرچر، لیڈز کے ستائیس سالہ جونو ایلیسن اور سٹیفرڈ شائر کے تیئیس سالہ لیہ پرنل نے اپنا یہ سفر پندرہ ماہ قبل شروع کیا تھا۔

اس سفر کے دوران وہ چار براعظموں اور پچاس ممالک سے گزرے۔

اس سفر میں ان تینوں نے اس وقت دنیا میں ٹیکسی پر بلند ترین مقام کے سفر کا ریکارڈ بھی بنایا جب وہ اپنی کار پر ماؤنٹ ایورسٹ کے بیس کیمپ تک جا پہنچے۔

ان تینوں کو سفر کے دوران ماسکو میں گرفتار کیا جبکہ جبکہ ایران کی خفیہ پولیس نے بھی انہیں حراست میں لیا اور پال آرچر کو مبینہ جاسوس قرار دیتے ہوئے ملک بدر بھی کیا۔

اس کے علاوہ مالدووا کی سرحد پر انہیں غلط ویزوں کی وجہ سے مشکلات کا سامنا رہا لیکن ان کے ایک دوست کی والدہ کی مالدووا کے صدر سے جان پہچان کی وجہ سے وہ وہاں جانے میں کامیاب رہے۔

ان دوستوں نے اس سفر کے دوران برٹش ریڈ کراس کے لیے بیس ہزار پونڈ کے عطیات جمع کیے ہیں اور ان کا دعویٰ ہے کہ جتنا سفر انہوں نے اپنی ٹیکسی پر کیا ہے اس کے کرائے کی رقم اسّی ہزار پونڈ کے قریب بنتی ہے۔