نیپال کی معدوم ہوتی پرسرار کوسنڈا زبان

آخری وقت اشاعت:  اتوار 13 مئ 2012 ,‭ 09:36 GMT 14:36 PST
گیانی مین سین

گیانی سین ان ماہر لسانی کے لیے ایک رسرچ کا موضوع ہیں جو اس زبان کو زندہ رکھنا چاہتے ہیں

پچھتر سالہ گیانی مایا سین نیپال میں وہ واحد شخصیت ہیں جو ملک کی معدوم ہوتی ایک پرسرار قبائلی زبان کوسنڈا بول سکتی ہیں۔

ماہر لسانیت کو تشویش ہے کہ گیانی مایا کے ساتھ ہی یہ زبان بھی ختم ہوجائے گی۔

یہ تشویش صرف ماہر لسانیت کو نہیں ہے بلکہ گیانی مایا بھی اسی بوجھ تلے دبی ہوئیں ہیں اور ان کی یہ پریشانی ہے بھی بلکل جائز کیونکہ نیپال میں اب ان کے علاوہ کوسنڈا زبان بولنے والا کوئی نہیں بچا۔

کوسنڈا زبان کہاں سے آئی اور اس کے پیچیدہ جملوں کی بناوٹ ماہر لسانیت کے لیے آج بھی ایک معمہ بنی ہوئی ہے۔

ماہر لسانیات اور ان کارکنان کے لیے جو اس زبان کو زندہ رکھنے کی کوششوں میں مصروف ہیں، ان کے لیے گیانی مایا ایک درس گاہ سے کم نہیں۔

نیپال کی تربھون یونیورسٹی میں لسانیات کے پروفیسر مادھو پرساد پوکھریل کئی دہائیوں سے کوسنڈا زبان پر تحقیق کر رہے ہیں۔

پروفسیر پوکھریل کا کہنا ہے کہ کوسنڈا زبان’ایک تنہا زبان ہے جس کا تعلق کسی اور زبان سے نہیں ملتا ہے۔‘

ان کا کہنا ہے کہ اگر کوسنڈا زبان ختم ہوگئي تو ’تو انسانی اثاثے کا ایک بے حد اہم حصہ ختم ہوجائے گا‘۔

ماہر لسانیات کے علاوہ خود گیانی مایا سین کو بھی اس بات کا احساس ہے کہ اس زبان کے خاتمے پر فکرمند رہتی ہیں۔

ان کا کہنا ہے ’خوشی قسمتی سے میں نیپالی زبان بھی بولتی ہوں۔ لیکن مجھے بہت افسوس ہوتا ہے کہ میں اپنے ہی لوگوں کے ساتھ اپنی قبائلی زبان میں بات نہیں کرسکتی ہوں۔‘

حالانکہ کوسنڈا قبائل کے بعض لوگ ابھی بھی ہیں لیکن نہ تو وہ یہ زبان بول سکتے ہیں اور نہ اسے سمجھ سکتے ہیں۔

گیانی مایا سین کو ڈر ہے کہ ان کے مرنے کے بعد اس زبان کو بولنے والا کوئی نہیں ہوگا۔

کوسنڈا نیپال میں رہنے والا ایک قبائلی برادری ہے جو شکار کر کے اپنا گزارہ کرتے ہیں اور جنگلوں میں جھوپڑی بنا کر رہتے ہیں۔

نپیال میں قبائلوں کےفلاح و بہبود کے لیے کام کرنے والی تنظیمیں اور ماہر لسانیات حکومت سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ وہ کوسنڈا قبائل کی زبان اور ان کے سماج کے تحفظ کے لیے اقدامات کرے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔