آئیوری کوسٹ: امن فوج کے سات سپاہی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP

اقوامِ متحدہ نے کہا ہے کہ آئیوری کوسٹ کے جنوب مغرب میں ہونے والی ایک جھڑپ میں نائیجریا سے تعلق رکھنے والے امن فوج کے سات سپاہی ہلاک ہو گئے ہیں۔

اقوام متحدہ کے مطابق یہ حملہ لائبیریا کی سرحد کے قریب ہوا۔

دوسری جانب اقوامِ متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے کہا ہے کہ انہیں امن فوج کے سات سپاہیوں کی ہلاکت نے اداس کر دیا ہے۔

بان کی مون کا کہنا تھا کہ ’یہ بہادر سپاہی آئیوری کوسٹ میں امن قائم کرنے کی کوششوں کے دوران ہلاک ہوئے۔‘

اقوامِ متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے نائیجریا سے تعلق رکھنے والے سات سپاہیوں کی ہلاکت پر نائیجریا کی حکومت سے تعزیت کرتے ہوئے آئیوری کوسٹ کی حکومت سے مطالبہ کیا کہ جرم کے مرتکب افراد کی نشاندہی کرتے ہوئے انہیں جواب دہ ٹھہرائے۔

واضح رہے کہ اقوامِ متحدہ کی امن فوج کو سنہ دو ہزار چار میں آئیوری کوسٹ میں جاری خانہ جنگی کے خاتمے میں مدد فراہم کرنے کے لیے تعینات کیا تھا۔

دریں اثناء اقوام متحدہ کے ترجمان نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ آئیوری کوسٹ میں امن فوج پر ہونے والا یہ اپنی نوعیت کا پہلا حملہ ہے۔

اقوام متحدہ کے اہلکاروں کے مطابق امن فوج کے سپاہی آئیوری کوسٹ کے تھائی اور پارہ نامی گاؤں کے درمیان ڈیوٹی پر موجود تھے۔

اقوامِ متحدہ کی امن فوج کے ترجمان کیرن ڈائر نے خبر رساں ایجنسی اے پی کو بتایا کہ صبح ہوتے ہی وہاں مذید نفری کو بھیج دیا جائے گا۔

آبجان میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار جان جیمز کا کہنا ہے کہ گزشتہ سال آئیوری کوسٹ کے سابق صدر لارین گوبیگو کی گرفتاری کے بعد آئیوری ملییشا کے جنگجو وہاں سے بھاگ چکے ہیں۔

اسی بارے میں