یونان: اہم پارلیمانی انتخابات کے لیے پولنگ

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption اتوار کو ہونے والے ان انتخابات پر عالمی برادری کی گہری نظر ہے

یونان میں چھ ہفتے کے عرصے میں دوبارہ منعقد ہونے والے پارلیمانی انتخابات کے لیے پولنگ کا آغاز ہو گیا ہے۔

یہ انتخابات بہت اہمیت کے حامل ہیں کیونکہ آئندہ حکومت کو ایسے فیصلے کرنا ہوں گے جو کہ یونان کے یورپی اتحاد میں رہنے یا نہ رہنے کا تعین کریں گے۔

ان انتخابات میں دو مرکزی امیدوار بائیں بازو کی جماعت ’سریزا‘ اور دائیں بازو کی جماعت ’نیو ڈیموکریسی‘ سے ہیں۔

دونوں جماعتوں میں اس بات پر اختلاف پایا جاتا ہے کہ مالی بحران کا حل یورپی امدادی معاہدے کی پاسداری ہے یا اس کو مسترد کر کے سماجی اخراجات کو بڑھا دیا جائے۔

یورپی رہنماؤں کا کہنا ہے کہ اگر امدادی معاہدے کو مسترد کیا گیا تو یونان کو یورو زون سے نکلنا ہوگا۔

گزشتہ چھ ہفتوں میں یہ دوسرے انتخابات ہیں کیونکہ چھ مئی کو ہونے والے انتخابات نتیجہ خیز نہیں تھے۔

اتوار کو ہونے والے ان انتخابات پر عالمی برادری کی گہری نظر ہے کیونکہ خدشات ہیں کہ یونان کے یورو زون چھوڑنے کی صورت میں عالمی معیشت میں مالی بحران کی ایک لہر دوڑ سکتی ہے۔

یونان کو یورپی ممالک کی طرف سے دو بین الاقوامی امدادی پیکج مل چکے ہیں تاہم ان کے ساتھ کفایت شعاری کی سخت شرائط منسلک تھیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption گزشتہ چھ ہفتوں میں یہ دوسرے انتخابات ہیں کیونکہ چھ مئی کو ہونے والے انتخابات نتیجہ خیز نہیں تھے

اگرچہ یہ امدادی پیکج یونان کو دیوالیہ ہونے سے بچائے ہوئے ہیں تاہم بہت سے یونانی شہری ان شرائط سے خوش نہیں۔

یہی وجہ ہے کہ ایک جماعت کے سوا انتخابات میں حصہ لینے والی تمام جماعتوں نے کسی نہ کسی حد تک ان شرائط پر دوبارہ مذاکرات کرنے کے وعدے کیے ہیں۔

یورو زون کے سب سے طاقتور ملک جرمنی کا اصرار ہے کہ یونان کو امدادی پیکج حاصل کرنے والے دوسرے ممبر ممالک کی طرح کفایت شعاری کے اقدامات پر عمل درآمد کرنا ہوگا۔

’نیو ڈیموکریسی‘ پارٹی کے سربراہ اینٹونیو سماراس نے جمعے کو کہا تھا کہ وہ یونان کو یوروزون میں رکھتے ہوئے مالی بحران سے نکالیں گے۔ البتہ وہ یورپی امدادی پیکج کے حق میں ہیں تاہم ان کا کہنا ہے کہ وہ اس کے ساتھ منسلک شرائط پر دوبارہ مذاکرات کریں گے۔

دوسری جانب سریزا کے رہنما الیکسز تیپرس یورپی امدادی پیکج کو مسترد کرتے ہوئے یورو زون میں رہنا چاہتے ہیں۔ ان کا خیال ہے کہ امدادی پیکج ان شرائط کے بغیر ہی ممکن ہے۔

پولنگ کے آغاز سے چند گھنٹے قبل بیشتر یونانی شہری یورو کپ دو ہزار بارہ میں اپنی قومی فٹبال ٹیم کی اچھی کارکردگی کا جشن منا رہے تھے۔

اسی بارے میں