یورو بحران، قبرص امدادی پیکیج کا خواہاں

یورپی اتحاد کا ایک اور ملک قبرص مالی بحران سے نمٹنے کے لیے یورو زون کے حکام سے امدادی پیکیج کی درخواست کرنے والا ہے۔

قبرص نے یورو زون کے حکام کو بتایا ہے کہ وہ مالی مشکلات سے نکلنے کے لیے مالی تعاون کی درخواست دینے کا ارادہ رکھتا ہے۔

دریں اثناء آئندہ ہفتے یورپی اتحاد کے اجلاس میں یورو کرنسی کو استحکام دینے کے حوالے سے کسی معاہدے پر نہ پہنچنے کے خدشات پر اٹلی، سپین اور یونان میں حصص بازاروں میں تیزی سے گراؤٹ دیکھنے میں آئی ہے۔

قبرص کا کہنا ہے کہ بیل آؤٹ پیکیج سے وہ بینکاری سیکٹر کی مدد کرے گا جو یونان کے معاشی بحران کی وجہ سے مالی مشکلات سے دوچار ہے۔

قبرص اگر امدادی پیکیج کے لیے باضابط درخواست کرتا ہے تو اس طرح وہ یورو زون کا پانچواں ملک ہو گا جس نے معاشی مشکلات سے نکلنے کے لیے بیل آؤٹ پیکیج حاصل کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP

قبرص کی حکومت کی جانب سے جاری ہونے والے مختصر بیان کے مطابق اس کے مالیاتی شعبے کا انحصار یونان پر ہونے کی وجہ سے منفی اثرات پڑے ہیں اور ان سے نکلنے کے لیے مدد کی ضرورت ہے۔

حکومتی ترجمان کا کہنا ہے کہ امدادی پیکیج کتنا ہو گا، اس کا دارو مدار آئندہ ہونے والے مذاکرات پر ہے۔

انہوں نے کہا کہ یورپ اتحاد سے مدد کی درخواست کے باوجود وہ یورپی اتحاد سے باہر کے کسی ملک جسیا کہ چین، روس سے مدد حاصل کرنے کے لیے مذاکرات جاری رکھے گا۔

قبرص پہلے ہی روس سے دو ارب پچاس کروڑ یورو کا قرض حاصل کر چکا ہے۔

خیال رہے کہ قبرص کو اپنے دوسرے بڑے بینک کو بچانے کے لیے آئندہ چند روز میں ایک ارب اسی کروڑ یورو کی ضرورت ہے۔

اسی بارے میں