گیلانی کی نشست پر ان کے بیٹے انتخاب لڑیں گے

گیلانی تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption قومی اسمبلی کی خالی ہونے والی نشست پر انیس جولائی کو ضمنی انتخاب ہو گا

سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی کی نااہلی کی وجہ سے خالی ہونے والی قومی اسمبلی کی نشست پر اب ان کے بڑے بیٹے عبدالقادر گیلانی انتخاب لڑیں گے۔

عبدالقادرگیلانی نے ضمنی انتخاب میں حصہ لینے کے لیے منگل کے روز اپنے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ہیں۔

قومی اسمبلی کی خالی ہونے والے نشست پر انیس جولائی کو ضمنی انتخاب ہوگا اور کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے آخری روز پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ نون کے رہنماؤں سمیت ایک درجن سے زائد امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے۔

سابق وزیر اعظم سید یوسف رضاگیلانی فروری دو ہزار آٹھ کے انتخابات میں اپنے آبائی شہر ملتان سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے ایک سو اکیاون سے منتخب ہوئے تھے تاہم سپریم کورٹ نے انیس جون کو سید یوسف رضا گیلانی کو نااہل قرار دے دیا تھا جس سے ان کی قومی اسمبلی ن کی نشست خالی ہوگئی۔

بی بی سی کے نامہ نگار عبادالحق کے مطابق ضمنی انتخابات میں عبدالقادر گیلانی پیپلز پارٹی کے امیدوار ہوں گے تاہم ان کے بھائی علی حیدر گیلانی نے متبادل امیدوار کے طور کاغذات جمع کرائے ہیں۔

عبدالقادر گیلانی اس وقت جنوبی پنجاب کے ضلع رحیم یار خان سے رکن پنجاب اسمبلی ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ وہ ضمنی انتخابات میں حصہ لینے کے لیے پنجاب اسمبلی کی رکنیت سے مستعفیْ ہو جائیں گے۔

کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے عبدالقادر گیلانی نے کہا کہ عدالتی فیصلے کے بعد مجبوراً کاغذات نامزدگی جمع کروانے پڑے ہیں اور عوام کی عدالت سب سے بڑی عدالت ہے۔

سابق وزیر اعظم کے بیٹے کے بقول وہ اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے۔

گیلانی خاندان کے روایتی حریف اور سابق وفاقی وزیر سکندر حیات خان بوسن تحریک انصاف میں شامل ہونے کی وجہ سے ضمنی انتخابات حصہ نہیں لے رہے تاہم ان کے جگہ ان کے بھائی شوکت حیات خان بوسن نے آزاد امیدوار کے طور پر کاغذات جمع کرائے ہیں۔

سکندر حیات خان بوسن نے فروری ستانوے اور اکتوبر دوہزار دو میں ہونے والے انتخابات میں یوسف رضا گیلانی کو مات دی تھی۔ سکندر حیات مسلم لیگ قاف سے علیحدگی کے بعد تحریک انصاف میں شامل ہوگئے تھے۔

حزب مخالف کی جماعت تحریک انصاف نے ضمنی انتخابات میں حصہ نہ لینے کا فیصلہ کیا ہے اور اسی وجہ سے سکندر حیات بوسن انتخابی معرکہ سے باہر ہیں۔

تحریک انصاف کے رہنما کے بھیتجے حسنین خان بوسن نے بھی متبادل امیدوار کی حیثیت سے کاغذات جمع کرائے ہیں۔

ملتان میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں مسلم لیگ نون کی طرف سے اسحاق پچہ، اور نواب ندیم الدین نے کاغذات جمع کرائے ہیں۔

مسلم لیگ نون کے امیدوار اسحاق بچہ ماضی میں تین مرتبہ پیپلز پارٹی کی طرف سے رکن پنجاب اسمبلی منتخب ہوچکے ہیں اور آخری بار انہوں نے اکتوبر دو ہزار دو میں پیپلز پارٹی کی ٹکٹ پر کامیابی حاصل کی تھی۔

ضمنی انتخابات میں حصہ لینے والے امیدوار پانچ جولائی کو اپنے کاغذات نامزدگی واپس لے سکیں گے جبکہ امیدواروں کی حتمی فہرست چھ جولائی کو جاری کی جائے گی۔

اسی بارے میں