مصر: فوج نے اقتدار محمد مرسی کے حوالے کر دیا

محمد مرسی
Image caption مصر میں حکمران فوجی کونسل نے محمد مرسی کو اقتدار سونپ دیا ہے

مصر کی حکمران فوجی کونسل نے ملک کا اقتدار نئے صدر محمد مرسی کے حوالے کر دیا ہے۔

مصر کے جمہوری طریقے سے منتخب ہونے والے پہلے عوامی صدر محمد مرسی نے سنیچر کو ہی قاہرہ میں ایک تاریخی تقریب میں اپنے عہدے کا حلف اٹھایا ہے۔

حلف برداری کے بعد قاہرہ کے نواح میں فوجی علاقے میں منعقدہ ایک تقریب میں مصر کی حکمران فوجی کونسل کے سربراہ فیلڈ مارشل محمد طنطاوی نے باضابطہ طور پر اقتدار صدر مرسی کو سونپ دیا

محمد مرسی کا تعلق اسلام پسند جماعت اخوان المسلمین سے ہے اور انہوں نے ملک کی سپریم آئینی عدالت کے سامنے حلف اٹھایا کہ وہ جمہوری نظام کا وفاداری سے دفاع کریں گے۔

مصر میں تقریباً ساٹھ سال بعد پہلا موقع ہے جب کسی غیر فوجی شخصیت نے عہدۂ صدارت سنبھالا ہے۔

محمد مرسی کے پیشرو حسنی مبارک کا تیس سالہ اقتدار، دو ہزار گیارہ میں بھرپور عوامی احتجاج کے نتیجے میں ختم ہوا تھا۔

حلف برداری کے بعد قاہرہ یونیورسٹی میں تقریر کرتے ہوئے انہوں نے وعدہ کیا کہ وہ اس پارلیمان کو بحال کریں گے جسے رواں ماہ ہی فوج نے تحلیل کر دیا تھا۔

محمد مرسی نے کہا کہ فوج کو لازماً عوامی رائے کا احترام کرنا چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ فوج اب اپنا اصل کام سنبھالے گی جو کہ اس ملک کے عوام اور اس کی سرحدوں کی نگہبانی کرنا ہے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ جس پارلیمان کو تحلیل کیا گیا وہ ایک منصفانہ اور شفاف انتخابات کے نتیجے میں بنی تھی اور اس پر ایک نئے جمہوری آئین کی تیاری کے لیے اعتماد کیا گیا تھا۔

گزشتہ نومبر منتخب ہونے والی اس پارلیمان میں اخوان المسلمین کی حمایت یافتہ فریڈم اینڈ جسٹس پارٹی اور دوسرے اسلامی اراکین کی اکثریت تھی۔

اپنی تقریر میں محمد مرسی نے ان افراد کو بھی خراجِ تحسین پیش کیا جو سابق حکومت کے خلاف جدوجہد کے دوران ہلاک ہوئے۔

علاقائی تجزیہ کار مغدی عبدالہادی کا کہنا ہے کہ محمد مرسی کو فوج سے ایک انتہائی پیچیدہ رشتہ نبھانا ہے۔

ان کے مطابق مصر میں سابق صدر حسنی مبارک کے دورِ اقتدار میں اعلیٰ عہدوں پر فائز لوگ آج بھی انہی عہدوں پر ہیں اور ان میں سے کئی نئے صدر کے ساتھ کام کرنے پر تیار نہ ہوں گے۔

محمد مرسی نے گزشتہ روز مصر میں سابق حکومت کے خلاف احتجاج کی علامت بن جانے والے تحریر سکوائر میں ایک مجمع عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ عوام کی طاقت سے بڑی طاقت کوئی نہیں اور اب مصر میں اقتدار اور حاکمیت کا منبع عوام ہیں۔

محمد مرسی نے عوام کو یہ یقین بھی دلایا تھا کہ وہ صدر کے کسی بھی اختیار سے دستبردار نہیں ہوں گے۔ حال ہی میں مصری میں حکمران فوج کی سپریم کونسل نے صدر کو حاصل بہت سے اختیارات اپنے ہاتھ میں لے لیے تھے۔

اسی بارے میں