آرورا: پولیس حملہ آور کے مکان میں داخل

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption امریکی پولیس نے طویل کوشش کے بعد بالآخر ایک روبوٹ کی مدد سے اس جال کو ناکارہ بنایا

امریکی ریاست کولوراڈو کے شہر آرورا کے ایک سینما گھر میں فائرنگ کرنے والے مشتبہ حملہ آور جیمز ہومز کے فلیٹ میں پولیس بالآخر داخل ہونے میں کامیاب ہو گئی ہے۔

جیمز ہومز کو سینما گھر میں فائرنگ کے واقعے کے بعد اسلحے سمیت گرفتار کیا گیا تھا۔

بیٹ مین فلم سیریز کی نئی فلم دی ڈارک نائٹ رائزز کی افتتاحی نمائش کے دوران جیمز ہومز کی فائرنگ سے بارہ افراد ہلاک اور انسٹھ زخمی ہو گئے تھے۔

امکان ہے کہ انہیں پیر کو عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

گزشتہ دو روز سے آرورا کی پولیس جیمز ہومز کے فلیٹ کا محاصرہ کیے ہوئے تھی لیکن فلیٹ میں دھماکہ خیز مواد کے جال نے پولیس کو فلیٹ میں داخل ہونے سے باز رکھا۔

امریکی پولیس نے طویل کوشش کے بعد بالآخر ایک روبوٹ کی مدد سے اس جال کو ناکارہ بنایا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ مشتبہ حملہ آور نے’ سوچ بچار اور حساب‘ لگا کر حملہ کیا اور وہ کئی ماہ سے اسلحہ جمع کر رہے تھے۔

وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی اور پولیس کے اہلکاروں نے جب حملہ آور کے فلیٹ میں ایک بارہ فٹ کے پائپ کے ذریعے روبوٹ داخل کیا تو معلوم ہوا کہ وہاں پر دھماکہ خیز مواد کا جال بچھایا گیا ہے۔

آرورا کے پولیس سربراہ ڈین اوٹس کے مطابق انہوں نے پہلے کبھی اس طرح کی چیزیں نہیں دیکھی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ’ فلیٹ کو اس طرح سے ڈیزائن کیا گیا تھا کہ اس میں داخل ہونے والا مارا جائے اور زیادہ امکان یہ تھا کہ یہ کوئی پولیس افسر ہوتا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جیمز ہومز کی فائرنگ سے بارہ افراد ہلاک اور انسٹھ زخمی ہو گئے تھے

اتوار کو علی الصبح بم ڈسپوزل سکواڈ کے اہلکاروں نے حملہ آور کے مکان میں ایک چھوٹے دھماکے کے ذریعے تاروں کے جال اور آگ لگانے والے آلات کو ناکارہ کیا۔

امریکی صدر کا بھی اتوار کو آرورا کا دورہ متوقع ہے جہاں وہ متاثرین سے ملاقات کریں گے۔

جس وقت فائرنگ کا واقعہ پیش آیا لوگ ریاست کولوراڈو کے شہر آرورا کے اس سینما گھر میں بیٹ مین فلم سیریز کی نئی فلم دی ڈارک نائٹ رائزز دیکھ رہے تھے۔

عینی شاہدوں کے مطابق گیس ماسک پہنے ہوئے ایک شخص نے ہال میں آنسو گیس پھینکنے کے بعد فائرنگ شروع کر دی۔

کولوراڈو میں ایک عینی شاہد نے بتایا کہ مسلح شخص آہستہ آہستہ سیڑھیاں چڑھ رہا تھا اور لوگوں کو نشانہ بناتا جا رہا تھا۔ فائرنگ شروع ہوتے ہی ہال میں لوگوں نے بھاگنا شروع کر دیا۔ بہت سے لوگ فلم کے مختلف کرداروں کے لباس پہنچ کر آئے تھے۔

اسی بارے میں