سپین: تین مشتبہ دہشتگرد گرفتار

میڈرڈ بم حملوں کی آٹویس برسی: پوسٹر تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سپین کے دارالحکوت میڈرڈ پر ایک بڑا دہشت گرد حملہ آٹھ سال پہلے ہوا تھا

سپین میں پولیس نے تین افراد کو القاعدہ تنظیم اور دہشتگردی سے تعلق کے شبہ پر گرفتار کر لیا ہے۔

ان افراد کو جنوبی سپین کے صوبے کادئز کے علاقے لا لینیا دے لا کونسیپیون سے حراست میں لیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق ان افراد سے دھماکہ خیز اور زہریلا مواد برآمد ہوا ہے۔

گرفتار ہونے والے افراد میں ایک چیچن اور ایک ترک بھی شامل ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ان کو شبہ ہے کہ ان میں سے ایک فرد پاکستان میں قائم کیمپ سے دہشتگردی کی تربیت حاصل کر چکا ہے۔

سپین کے روزنامے ’ایل پائیس‘ کے مطابق تنظیم ’القاعدہ اِن دا اریبئین پیننسولا‘ نے جولائی میں ایک پیغام جاری کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ ان کو سپین میں ایسے افراد کی تلاش ہے جو ان کے لیے کام کر سکیں۔

آٹھ سال پہلے یعنی گیارہ مارچ دو ہزار چار میں سپین کے دار الحکومت میڈرڈ میں ایک بڑے دہشتگرد حملے میں ایک سو نوے افراد ہلاک ہوئے تھے۔

حکومت نے ان ابتدائی اطلاعات پر کوئی بیان نہیں دیا تاہم سپین کے وزیر داخلہ اس سلسلے میں ایک اخباری کانفرنس سے خطاب کریں گے۔

اسی بارے میں