لیبیا: دو بم دھماکوں میں دو افراد ہلاک

آخری وقت اشاعت:  اتوار 19 اگست 2012 ,‭ 08:33 GMT 13:33 PST

یہ حملہ اس وقت پیش آیا جب لوگوں کی ایک بڑی تعداد عید الفطر کے موقع پر عید کی نماز پڑھنے کی تیاری کر رہی تھی

اطلاعات کے مطابق لیبیا کے دارالحکومت طرابلس میں دو بم دھماکوں میں کم از کم دو افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

ایک بم دھماکہ وزارتِ داخلہ کی عمارت کے قریب جبکہ دوسرا فوج کے خواتین کے لیے سابقہ تربیتی دفاتر کے پاس ہوا۔ ہلاک ہونے والے دونوں افراد وزارتِ داخلہ کی عمارت کے قریب ہونے والے دھماکے میں ہلاک ہوئے۔ دوسرے دھماکے سے ہونے والے جانی نقصان کی اطلاعات نہیں ملیں۔

امدادی عملہ فوراً جائے وقوع پر پہنچ گیا اور علاقوں کو گھیرے میں لے لیا گیا۔

گزشتہ سال معمر قذافی کی ہلاکت کے بعد لیبیا میں یہ پہلا جان لیوا بم حملہ تھا۔

طرابلس میں حفاظتی انتظامات کے سربراہ نے ان حملوں کی ذمہ داری سابق حکمران کرنل قدافی کے حمایتیوں پر ڈال دی ہے اور ان کے مطابق دو ہلاکتوں کے علاوہ چاد یا پانچ افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ قذافی حمایتیوں کو مالی امداد ہمسایہ ملک کے ذریعے بھیجی جا رہی ہے۔

یہ حملہ اس وقت پیش آیا جب لوگوں کی ایک بڑی تعداد عید الفطر کے موقع پر عید کی نماز پڑھنے کی تیاری کر رہی تھی۔

اس ماہ کے آغاز میں لیبیا میں اقتدار کی منتقلی کے لیے بنائی گئی عبوری کونسل نے پہلی بار لیبیا میں ایک منتخب حکومت کو اقتدار سونپا۔

تاہم حکومت کے لیے ایک بڑا چیلنج دہشت گردی کاخاتمہ ہے۔ مشرقی شہر بن غازی میں گزشتہ کئی ماہ میں بہت سے حملے ہوئے ہیں۔

البتہ حکومت ان حملوں کی ذمہ داری قذافی کے حمایتی گروہوں پر سونپتی ہے تاہم سیکورٹی فورسز بھی مسلح گروہوں کے خلاف نتیجہ خیز کارروائی کرنے میں ناکام رہی ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔