امریکی افواج کے سربراہ کے جہاز پر حملہ

آخری وقت اشاعت:  منگل 21 اگست 2012 ,‭ 11:12 GMT 16:12 PST
جنرل مارٹن ڈیمپسی

جنرل ڈیمپسی غیر ملکی فوجیوں پر افغان سکیورٹی اہلکاروں کے بڑھتے ہوئے حملوں پر بات چیت کے لیے افغانستان آئے تھے

افغانستان میں غیر ملکی فوج کی موجودگی کے مخالفین کی طرف سے ایک امریکی فوجی اڈے پر راکٹوں کے حملے میں امریکہ کے جنرل مارٹن ڈیمپسی کے طیارے کو نقصان پہنچا ہے۔

افغانستان کے دورے پر آئے ہوئے جنرل ڈیمپسی حملے کے وقت طیارے کے قریب نہیں تھے، تاہم اس حملے میں دو اہلکار معمولی زخمی ہوئے ہیں۔

حملہ پیر کی رات کو دیر گئے بگرام کے فوجی اڈے پر ہوا۔ جنرل ڈیمپسی افغانستان کے سکیورٹی اہلکاروں کے غیر ملکی فوجیوں پر بڑھتے ہوئے حملوں کے بارے میں بات چیت کے لیے آئے ہیں۔

نیٹو کی طرف سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق اس حملے میں جنرل ڈیمپسی کے طیارے کے علاوہ ایک ہیلی کاپٹر کو بھی نقصان پہنچا ہے۔جنرل ڈیمپسی منگل کو ایک دوسرے طیارے سے واپس روانہ ہو گئے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔