’اسانژ جب تک چاہیں رہ سکتے ہیں‘

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 24 اگست 2012 ,‭ 02:04 GMT 07:04 PST

برطانوی حکومت یہ واضح کر چکی ہے کہ اگر اسانژ سفارتخانے سے باہر نکلے تو انہوں گرفتار کر لیا جائے گا

جولین اسانژ کو سیاسی پناہ دینے والے ملک ایکواڈور کے صدر رافائل کوریا کا کہنا ہے یہ سفارتی تنازع کل ختم ہو سکتا ہے اگر برطانیہ جولین اسانژ کو محفوظ راستے سے ملک سے باہر جانے دے۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ مسئلہ کئی ماہ یا کئی ماہ تک جاری رہ سکتا ہے۔

جولین اسانژ جون سے لندن میں ایکواڈور کے سفارتخانے میں پناہ لیے ہوئے ہیں۔ گزشتہ جمعرات کو انہیں باضابطہ طور پر سیاسی پناہ دینے کا اعلان کیا گیا۔

وکی لیکس کے بانی جولین اسانژ مجرمانہ جنسی حملے کے الزامات میں ایک مقدمے میں سوئیڈن اور برطانوی حکام کو مطلوب ہیں جن سے وہ انکار کرتے ہیں۔

اس سے پہلے ایکواڈور کے صدر کہہ چکے ہیں کہ اگر برطانوی حکومت اس بات کی ضمانت دے کہ انہیں ’کسی تیسرے ملک‘ کے حوالے نہیں کیا جائے گا تو انہیں برطانوی حکام کے حوالے کرنے پر غور کیا جا سکتا ہے۔

سویڈن کی حکومت اس بات پر زور دے رہی ہے کہ وہ ایک ایسے معاملے میں ضمانت نہیں دے سکتی جس کا فیصلے عدالت میں ہوگا۔

ادھر برطانیہ کا موقف ہے کہ وہ اسانژ کو ملک چھوڑنے کا محفوظ راستہ فراہم نہیں کرے گا۔

برطانیہ کی جانب سے سفارتخانے میں داخل ہونے کی دھمکی کے بارے میں صدر رافائل کوریا کا کہنا تھا کہ اگر برطانیہ نے ایسا کیا تو وہ وہ سفارتی خودکشی کرئے گا اور دنیا بھر میں اپنے سفارتخانوں کو خطرے میں ڈال دے گا۔

برطانوی حکومت یہ واضح کر چکی ہے کہ اگر اسانژ سفارتخانے سے باہر نکلے تو انہوں گرفتار کر لیا جائے گا جس کے لیے سفارتخانے کے باہر کئی پولیس اہلکار تعنات کیے گئے ہیں۔ تاہم برطانوی حکومت نے امید ظاہر کی ہے کہ یہ مسئلہ سفارتی بنیادوں پر حل کیا جا سکے گا۔

ادھر سفارتخانے کے عملے نے بتایا کہ باورچی خانہ نہ ہونے کی وجہ سے ایک بڑا فریج خریدا گیا ہے اور سونے کے لیے بستر سفیر کے گھر سے لایا گیا۔

ایکواڈور کی سفیر نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ جب تک چاہیں یہاں رہ سکتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ برطانیہ کو اس بات کی فکر کرنے کی ضرورت نہیں کہ کہیں سفارتخانے کا عملہ اسانژ کو کہیں بھگا نہ دے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔