نیویارک فائرنگ: دو ہلاک، نو زخمی

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 24 اگست 2012 ,‭ 16:59 GMT 21:59 PST
ایمپائر سٹیٹ بلڈنگ فائرنگ

واقعہ کا بظاہر دہشت گردی سے تعلق نہیں

حکام نے کہا ہے کہ نیویارک میں ایمپائر سٹیٹ بلڈنگ کے باہر فائرنگ کے ایک واقعے میں دو افراد ہلاک اور نو زخمی ہو گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق پولیس نے حملہ آور کو گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ حکام نے بتایا ہے کہ نیویارک کے معروف سیاحتی مقام پر ہونے والے اس واقعے میں نو افراد زخمی ہو گئے۔

یہ واقعہ مقامی وقت کے مطابق صبح نو بجے پیش آیا۔

نیویارک کے میئر بلوم برگ نے ایک اخباری کانفرنس کو بتایا کہ ممکن ہے بعض لوگ پولیس کی چلائی گئی گولیوں سے زخمی ہوئے ہوں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ زخمیوں کی حالت خطرے سے باہر ہے اور توقع ہے کہ وہ مکمل طور پر صحت یاب ہو جائیں گے۔

پولیس کمشنر رے کیلی نے بتایا کہ مشتبہ حملہ آور کو تقریباً ایک سال پہلے نوکری سے نکال دیا گیا تھا۔ وہ ایمپائر سٹیٹ بلڈنگ کے قریب خواتین کے سامان سے متعلق ایک دکان میں کام کرتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ ’برہم‘ حملہ آور کے پاس اعشاریہ پینتالیس کیلیبر کا پستول تھا اور اس نے اپنے ایک سابق رفیقِ کار کو سر میں گولی مار کر ہلاک کر ڈالا۔

حملہ آور کے بارے میں کہا گیا ہے کہ وہ تریپن سالہ جیفری جانسن تھا۔ ہلاک ہونے والے دوسرے شخص کا نام ظاہر نہیں کیا گیا۔ اس کی عمر اکتالیس برس تھی۔

کمشنر نے کہا کہ ایک مزدور نے مسلح شخص کا پیچھا کیا اور ایمپائر سٹیٹ بلڈنگ کے باہر کھڑے دو پولیس اہل کاروں کو خبردار کر دیا۔ پولیس اور مسلح شخص میں لڑائی ہوئی جس کے بعد پولیس نے اسے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔

عینی شاہدین کے مطابق لوگوں کو جائے وقوعہ سے بھاگتے ہوئے دیکھا گیا۔

ایک عینی شاہد نے نیویارک ڈیلی نیوز اخبار کو بتایا کہ حملہ آور کوٹ پینٹ میں ملبوس تھا اور اس کے ہاتھوں میں ایک بریف کیس تھا۔

عالیہ امام نامی ایک خاتون نے ٹی وی سٹیشن فاکس فائیو نیوز کو بتایا کہ حملہ آور ’لوگوں پر اندھادھند گولیاں برسا رہا تھا۔‘

انہوں نے کہا کہ حملہ آور کے قریب کھڑی ایک نوجوان خاتون کو گولی لگی اور وہ نیچے گر گئی۔

ایمپائر سٹیٹ بلڈنگ نیویارک کا معروف سیاحتی مقام ہے جہاں ہر سال تقریباً چار لاکھ سیاح آتے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔