چین میں زلزلے: تینتیس افراد ہلاک

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 7 ستمبر 2012 ,‭ 12:27 GMT 17:27 PST
چین میں زلزلے کی ایک فائل فوٹو

جن علاقوں میں زلزہ آیا ہے وہاں سے ہزاروں لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کردیا گیا ہے

چین میں سرکاری میڈیا کے مطابق ملک کے جنوب مغربی علاقوں میں آنے والے دو زلزلوں میں کم سے کم تینتالیس افراد ہلاک اور ایک سو پچاس زخمی ہو گئے۔

زنہوا نیوز ایجنسی کے مطابق یہ زلزلے ینان اور کیوئچاؤ‎ صوبوں کے سرحدی علاقوں میں مقامی وقت کے مطابق گیارہ بج کر انیس منٹ پر آئے۔

حکام کے مطابق زلزلوں کے باعث بیس ہزار مکانات کو نقصان پہنچا۔

سرکاری میڈیا کے مطابق چین کے مقامی وقت کے مطابق گیارہ بج کر انیس منٹ پر صوبے ینان کے سرحدی علاقے میں پانچ اعشاریہ سات شدت کا زلزلہ آیا تاہم دوسرے صوبے کیوئچاؤ میں تاحال کوئی ہلاکت رپورٹ نہیں ہوئی۔

سرکاری ٹی وی پر دکھائی جانے والی تصاویر میں ہزاروں مقامی افراد اپنے گھروں سے باہر نکل آئے۔

چین میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار جان سدورتھ کو ینان کے شہر زہتونگ کے ایک ہوٹل میں کام کرنے والوں نے فون پر بتایا ہے کہ زلزلے سے ان کے ہوٹل کی عمارت کو جھٹکے لگے اور الماریوں اور میزوں سے سامان گرنے لگا۔

ان کا کہنا تھا کہ ہوٹل کے کمروں میں رہنے والے مہمانوں کو ہوٹل سے باہر نکلنے کے احکامات جاری کیے گئے تھے۔

مقامی حکام کے مطابق سرکاری ٹیمیں متاثرین کو ٹینٹس اور کمبل تقیسم کرنے کے لیے بھیج دی گئی ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔