’الہاشمی کو عراق کے حوالے نہیں کریں گے‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 11 ستمبر 2012 ,‭ 14:14 GMT 19:14 PST

طارق الہاشمی اس سال کے اوائل میں وہ عراق سے فرار ہو گئے تھے

ترکی نے کہا ہے کہ وہ مفرور عراقی صدر طارق الہاشمی کو عراق کے حوالے نہیں کرے گا جہاں انہیں غیر حاضری میں سزائے موت دی گئی ہے۔

طارق الہاشمی اپریل سے ترکی میں جلا وطنی کی زندگی گزار رہے ہیں اور گزشتہ اتوار کو ایک عراقی عدالت نے قتل کے الزام میں مجرم قرار دیتے ہوئے ان کی غیرموجودگی میں انہیں سزائے موت سنائی تھی۔

ترکی کے وزیراعظم طیب اردگان نے انقرہ میں ایک نیوز کانفرس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ’سوال ہی نہیں پیدا ہوتا، الہاشمی ان جرائم میں ملوث تھے جن پر انہیں قصور وار قرار دیے جانے پر اصرار کیا جا رہا ہے، ہم انہیں حوالے نہیں کریں گے۔‘

طارق الہاشمی کا موقف ہے کہ ان کے خلاف الزامات کے سیاسی محرکات ہیں۔

انہوں نے پیر کو ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ ایک شفاف عدالتی کارروائی کا سامنا کرنے کو تیار ہیں لیکن عراقی عدالتیں شیعہ مسلک سے تعلق رکھنے والے وزیراعظم نورالمالکی کے زیر اثر ہیں۔

طارق الہاشمی نے وزیراعظم مالکی کی حکومت پر بدعنوانی، غیر امتیازی سلوک برتنے اور فرقہ واریت کو ہوا دینے کا الزام عائد کیا۔

طارق الہاشمی کے مطابق’امریکہ نے آئندہ ہونے والے صدارتی انتخابات کی وجہ سے اس معاملے پر آنکھیں بند کر رکھی ہیں۔‘

گزشتہ سال انیس دسمبر کو عراقی حکومت نے سنی مسلک سے تعلق رکھنے والے طارق الہاشمی کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔

ان پر شیعوں اور سکیورٹی فورسز کے ارکان کے خلاف ’ڈیتھ سکواڈ‘ چلانے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

طارق الہاشمی کے خلاف قتل کے مقدمے میں استغاثہ کا موقف تھا کہ طارق الہاشمی کم از کم ایک سو پچاس افراد کی ہلاکت کے ذمہ دار تھے۔

طارق الہاشمی کی غیر موجودگی میں چلنے والے مقدمے کی سماعت کے دوران ان کے کئی سابق باڈی گارڈوں نے عدالت کو بتایا کہ انہیں نائب صدر نے کئی افراد کو قتل کرنے کے احکامات دیے تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔