مصر: سینائی میں سکیورٹی عمارت پر حملہ

آخری وقت اشاعت:  پير 17 ستمبر 2012 ,‭ 00:56 GMT 05:56 PST

صحرائے سینائی میں شدت پسندوں کو عموماً اسلامی شدت پسند سمجھا جاتا ہے تاہم ان کی شناخت واضح نہیں ہے

مصر میں حکام کے مطابق مشتبہ اسلامی شدت پسندوں نے صحرائے سینائی میں سیکورٹی کے صدر دفتر پر ایک قریبی عمارت سے راکٹوں کی مدد سے حملہ کیا ہے۔

حکام کا کہنا تھا کہ العریش میں ہوئے اس حملے کے بعد سیکورٹی اہلکاروں اور شدت پسندوں کے بیچ قریبی گلیوں میں جھڑپیں شروع ہوگئیں۔

ان جھڑپوں میں ایک پولیس اہلکار ہلاک جبکہ تین زخمی ہوئے ہیں۔

یاد رہے کہ مصری حکام نے اگست کے مہینے میں سولہ فوجیوں کی ہلاکت کے بعد علاقے میں حفاظتی انتظامات سخت کر دیے تھے۔

قاہرہ سے بی بی سی کے نمائندے جون لین کا کہنا تھا کہ صحرائے سینائی میں شدت پسندوں کو عموماً اسلامی شدت پسند سمجھا جاتا ہے تاہم ان کی شناخت واضح نہیں ہے۔

سیکورٹی ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ لوگ مصری اور غیر ملکی اسلامی شدت پسند گروہوں سے تعلق رکھنے والے مسلح افراد ہیں جو علاقے میں امن و امان کی غیر مستحکم صورتحال کا فائدہ اٹھاتے رہے ہیں۔

بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ بظاہر یہ مسلح افراد مقامی خانہ بدوشوں کے ساتھ مل کر کام کرتے ہیں جن کی مصری حکومت سے علیحدہ شکایات ہیں۔

حملہ آوروں نے علاقہ چھوڑ دیا ہے جس کے بعد وہاں لڑائی رک چکی ہے۔

ایک اہلکار کا کہنا تھا کہ ایسا لگ رہا ہے کہ انہوں نے جس عمارت پر حملہ کیا پہلے اس میں دھماکہ کیا اور پھر راکٹ داغے۔

ایک اور واقعے میں غزہ پٹی کی سرحد کے قریب شیخ زووید نامی قصبے میں مسلح افراد اور سیکورٹی فورسز کے درمیان جھڑپوں میں تین پولیس اہلکار زخمی ہو گئے ہیں۔

فوری طور پر حاصل ہونے والے شواہد کے مطابق صحرائے سینائی میں ہونے والی حالیہ جھڑپوں کا پیغمبرِ اسلام پر متنازع فلم کے خلاف مسلم دنیا میں جاری کشیدگی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

ہمارے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ یہ حملے اس بات کا ثبوت ہیں کہ مصری فوج کی تعیناتی کے باوجود اس علاقے میں امن و امان کی صورتحال ٹھیک نہیں ہے۔

انیس سو بیاسی میں اسرائیلی فوج کے سینائی کے علاقے سے واپسی کے بعد سے اس خطے کی دونوں ممالک کے درمیان ہوئے ایک خصوصی معاہدے کے تحت نگرانی کی جاتی ہے جس کی وجہ سے مصری فوج کے علاقے میں آپریشن کرنے پر کچھ پابندیاں ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔