اسرائیلی فضائی حملے میں دو فلسطینی ہلاک

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 20 ستمبر 2012 ,‭ 13:35 GMT 18:35 PST

فلسطینی حکام کے مطابق غزا پراسرائیلی فضائی حملے میں حماس کے دو سیکورٹی اہلکار ہلاک ہوئے۔

فلسطین میں حکام کے مطابق اسرائیل کی طرف سے غزہ میں ہونے والے فضائی حملے میں حکمران جماعت حماس کے دو سکیورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق مصر کے ساتھ غزہ کے سرحدی علاقے رفاہ میں ان کی گاڑی کو نشانہ بنا کر ان کو ہلاک کیا گیا۔

اسرائیلی حکام کا دعویٰ ہے کہ انھوں نے دو دہشتگردوں کو مار کر دہشتگردی کے ایک منصوبے کو ناکام بنا دیا ہے۔

دوسری طرف وقفے وقفے سے اسرائیل اور غزہ کے سرحد پر پرتشدد واقعات رونما ہو رہے ہیں۔

پچھلے ہفتے بھی اسرائیلی فضائی حملے میں چھ فلسطینی مارے گئے جو اسرائیل کا دعویٰ ہے کہ دہشتگرد تھے۔

اسرائیل پر راکٹوں سے حملوں میں کئی اسرائیلی زخمی ہوئے جبکہ اسرائیل کی طرف سے غزہ پر مزید جوابی کارروائیوں میں دو فلسطینی زخمی ہوگئے۔

حماس کا دعویٰ ہے کہ حالیہ حملوں میں ہلاک ہونے والے دو سرحدی محافظ تھے ایک تینتیس سالہ لفٹینٹ اشرف صالح اور دوسرے ان کے ساتھی بائیس سالہ انیس ابو ایل اینین تھے۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ وہ مصر کے ساتھ سرحدی علاقے غزہ کی پٹی میں معمول کی حفاظتی گشت پر تھے۔

واقعہ کی تصاویر میں لوگ ایک جلی ہوئی سفید ٹویوٹا کے گرد جمع نظر آتے ہیں۔

اسرائیل نے الزام لگایا ہے کہ یہ لوگ الاقصٰی کی دفائی گروپ سے تعلق رکھتے تھے جو دہشت گرد ہیں اور جن کو حماس کی پشت پناہی حاصل ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔