’تعلقات میں پیش رفت پر تبادلۂ خیال‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 25 ستمبر 2012 ,‭ 04:35 GMT 09:35 PST
فائل فوٹو

صدر زرداری گذشتہ بار امریکہ میں افغانستان کے مسئلے پر نیٹو کانفرنس میں شرکت کرنے شکاگو آئے تھے

صدر آصف علی زرداری کی امریکی وزیر خارجہ ہلری کلنٹن سے ہونے والی ملاقات میں نیٹو سپلائی کی بحالی کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات میں حالیہ پیش رفت پر تبادلۂ خیال کیا گیا۔

صدر زرداری اقوام متحدہ کی جنرل اسبملی کے سڑسٹھویں سالانہ اجلاس میں شرکت کے لیے امریکی شہر نیویارک میں ہیں اور منگل کو جنرل اسبملی کے اجلاس سے خطاب بھی کریں گے۔

پیر کو نیویارک میں صدر زرداری نے امریکی وزیر خارجہ ہلری کلنٹن سے ملاقات کی۔

پاکستان کے سرکاری خبر رساں ادارے اے پی پی کے مطابق پاکستان میں زمینی راستے سے افغانستان میں تعینات اتحادی افواج کی رسد کی فراہمی شروع ہونے کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات میں حالیہ مثبت پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

خیال رہے کہ گذشتہ سال نومبر میں نیٹو کی جانب سے مہمند ایجسنی میں پاکستانی فوج کی سرحدی چوکی پر فضائی حملے کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات کشیدہ ہو گئے تھے اور پاکستان نے نیٹو سپلائی کو بند کر دیا تھا۔

"ملاقات خوشگوار ماحول میں ہوئی اور اس میں واضح نظر آ رہا تھا کہ دونوں ممالک ایک دوسرے سے تعلق بڑھانے میں دلچسپی لے رہے ہیں۔"

اقوام متحدہ میں پاکستان کے نامزد سفیر مسعود خان

اے پی پی کے مطابق امریکی وزیر خارجہ اور صدر زرادری کے درمیان ہونے والی ملاقات میں پشاور طورخم روڑ کو بہتر کرنے کے حوالے سے ایم او یو پر دستخط کیے گئے اور باہمی دلچپسی کے دیگر امور پر بھی بات چیت ہوئی۔

اقوام متحدہ میں پاکستان کے نامزد سفیر مسعود خان نے اس ملاقات کے بارے میں صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ملاقات خوشگوار ماحول میں ہوئی اور اس میں واضح نظر آ رہا تھا کہ دونوں ممالک ایک دوسرے سے تعلق بڑھانے میں دلچسپی لے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ قیادت کی جانب سے دونوں ممالک میں تعلقات کی بہتری کے لیے اقدامات کے لیے کہا گیا ہے۔

اس ملاقات میں میں صدر زرداری کی معاونت وزیر خارجہ حنا ربانی کھر، امریکہ میں پاکستان کی سفیر شیری رحمان، اے این پی کے سربراہ اسفند یار ولی، ایم کیو ایم کے رہنما فاروق ستار جبکہ امریکی وزیر خارجہ کی معاونت نائب سیکرٹری ٹام نائڈز، پاکستان اور افغانستان کے لیے امریکی صدر کے خصوصی ایلچی مارک گراسمین، جنرل ڈگلس لیوڈ اور دیگر سینئر حکام نے کی۔

صدر زرداری گذشتہ بار امریکہ میں افغانستان کے مسئلے پر نیٹو کانفرنس میں شرکت کرنے شکاگو آئے تھے۔

اس اجلاس میں نیٹو سپلائی بند ہونے کی وجہ سے امریکی قیادت کی طرف سے ان کے ساتھ سردمہری کی کہانیاں امریکی و عالمی میڈیا پر کافی گردش کرتی رہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔