شام میں جنگ بندی کا امکان: امن ایلچی

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 20 اکتوبر 2012 ,‭ 13:48 GMT 18:48 PST

بین الاقوامی امن ایلچی الخضر ابراہیمی نے شام میں جاری لڑائی کو روکنے کے لیہ شامی حکومت کے ساتھ بات چیت شروع کی ہے۔

عرب لیگ اور اقوامِ متحدہ کی نمائندگی کرتے ہوئے براہیمی نے شام کے وزیر ِخارجہ ولید معلم سے ملاقات کی۔ یہ ملاقات دارالحکومت دمشق میں وزارتِ خارجہ کی عمارت میں ہوئی۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ آئندہ ہفتے مسلمانوں کے مذہبی تہوار عید الاضحیٰ کےتک فوج اور باغیوں میں جنگ بندی ہو جائے گی۔

الاخصر براہمی اپنے دورے میں شامی صدر بشار الاسد سے بھی ملیں گے۔

سنیچر کے روز بھی دمشق کے گرد نواح میں گولہ باری کی آوازیں سنائی دیتی ہیں۔

فریقین میں جاری لڑائی اب ترک سرحد کے قریبی واقع شمالی قصبے حریم میں تک پہنچ گئی ہے۔

بی بی سی کے نامہ نگار لینا سنجاب کا کہنا ہے کہ مقامی لوگ جنگ بندی کے لیے بے تاب ہیں لیکن انہیں شبہ ہے کہ صدر بشار الاسد کی فوج اس بات پر رضا مند نہیں ہو گی۔

اس سے پہلے بارہ اپریل کو ہونے والی جنگ بندی بہت جلد ختم ہوگئی تھی اور اس کے بعد پہلے سے زیادہ تشدد شروع ہو گیا تھا۔

شمالی شام میں ہونے والی زیادہ تر لڑائی مرات النعمان نامی قصبے میں ہو رہی ہے جہاں باغیوں نے ایک ہفتے سے زائد عرصے سے قبضے قائم رکھا ہوا ہے۔

اس علاقے کو اس لحاظ سے اہمیت حاصل ہے کہ یہ شام کے سب سے بڑے شہر حلب اور دارالحکومت دمشق کے درمیان سپلائی کا راستہ ہے۔

اس علاقے میں فوج نے کنٹرول حاصل کرنے کے لیے جمعے کی رات فضائی حملے بھی کیے ہیں۔

گذشتہ اٹھارہ ماہ سے باغی صدر بشار الاسد کے خلاف لڑ رہے ہیں اور اس دوران لگ بھگ تیس ہزار افراد مارے جا چکے ہیں۔

ا س معاملے کا سفارتی حل تلاش کرنے کے لیے بین الاقوامی برادری کو کوششیں جاری ہے تاہم سلامتی کونسل میں شام کے حوالےسے ممالک بٹے ہوئے ہیں۔

آین لائن پوسٹ کی جانے والے ایک ویڈیو میں شامی باغیوں کے ایک گروہ نے مشروط جنگ بندی کی پیشکش کی ہے تاہم باقی گروہوں نے ابھی کوئی فیصلہ نہیں کیا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔