منحرف ایرانیوں کے لیے سخاروف پرائز

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 26 اکتوبر 2012 ,‭ 15:54 GMT 20:54 PST

دونوں ایرانی شہریوں کو پرائز دینے کا فیصلہ متفقہ طور پر کیا گیا: یورپی پارلیمان

یورپین پارلیمان کی طرف سے اس سال’سخاروف پرائز‘ ایران کے دو شہریوں کو مشترکہ طور پر دیا گیا ہے۔

دونوں ایرانی شہریوں نسرین ستودہ اور جعفر پناہی کو ملک میں حکومت مخالف کارکنوں کا ساتھ دینے پر یہ انعام دیا گیا ہے۔

اس ایورڈ کے لیے روس میں صدر ولادی میر پوتن کے خلاف احتجاج کرنے والے میوزک بینڈ پُسی رائٹ کی جیل کاٹنے والی ارکان اور بیلاروس میں سول حقوق کے لیے کام کرنے والی کارکن کو بھی نامزد کیا گیا تھا۔

یورپی یونین کا سخاروف حقوق انسانی کا دفاع کرنے اور آزاد رائے کے حوالے سے دیا جاتا ہے۔ پرائز جیتنے والوں کو پینسٹھ ہزار ڈالر کی رقم بھی ادا کی جاتی ہے۔

اس سال یہ پرائز حاصل کرنے والی وکیل نسرین ستودہ نے سال دو ہزار نو میں ایران میں متنازع صدارتی انتخابات کے خلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین کے علاوہ بچوں اور خواتین کا دفاع کیا تھا۔

اس وقت نسرین ملکی سلامتی کے خلاف کام کرنے اور حکومت کے خلاف پروپیگنڈا کرنے کے الزام میں چھ سال کی جیل کاٹ رہی ہیں ۔

قید تنہائی کاٹنے والی پینتالیس سالہ نسرین گزشتہ دنوں اپنے خاوند اور بچوں کو انتطامیہ کی جانب سے ہراساں کیے جانے پر احتجاجاً بھوک پڑتال پر چلی گئیں تھیں۔

سماجی حقیقت نگاری کے لیے معروف جعفر پناہی نے اپنی کئی فلموں میں ایرانی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

انہیں سال دو ہزار دس میں گھر پر نظر بند کر دیا گیا اور بیس سال تک فلمیں بنانے پر پابندی عائد کر دی۔

سال دو ہزار میں ان کی دستاویزی فلم ’دس از ناٹ اے فلم‘ کو ایک ’یو ایس بی‘ کے ذریعے ایران سے باہر سمگل کیا گیا تھا۔

یورپی پارلیمنٹ کے صدر مارٹن شولز کا کہنا ہے کہ دونوں ایرانی شہریوں کو پرائز دینے کا فیصلہ متفقہ طور پر کیا گیا ہے۔

گزشتہ سال یہ انعام عرب دنیا میں تبدیلی کی لہر میں کرادر ادا اکرنے والے پانچ افراد کو دیا گیا تھا

اس ایوارڈ کو سنہ انیس سو اٹھاسی میں شروع کیا گیا تھا اور اس کا نام ایک سابق سوویت سائنسدان اور منحرف آندرے سخاروف کے نام پر رکھا گیا ہے۔

آندرے سخاروف روسی جوہری سائنسدان تھے جنہوں نے سابق سوویت یونین میں ایٹمی اسلحہ کی تیاری میں اہم کردار ادا کیا لیکن بعد میں انسانیت اور ماحول پر اس کے برے اثرات کو مدنظر رکھتے ہوئے ایٹمی ہتھیاروں کی تیاری اور ان کی آزمائش کے خلاف بھرپور کردار ادا کیا۔

سخاروف کو اپنے خیالات کی بنا پر سوویت یونین میں قیدو بند کی صعوبتوں سے بھی گزرنا پڑا۔

سنہ انیس سو اٹھاسی میں پہلا سخاروف پرائز جنوبی افریقہ کے نیلسن منڈیلا نے حاصل کیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔