برما: زلزلے میں چھبیس افراد ہلاک

آخری وقت اشاعت:  منگل 13 نومبر 2012 ,‭ 18:03 GMT 23:03 PST

برما میں زلزلے عموماً آتے رہتے ہیں۔

برما کے مرکزی علاقوں میں اتوار کو آنے والے زلزلے میں کم از کم چھبیس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

برما کی ہلال احمر تنظیم کے مطابق دس افراد ابھی تک لاپتہ ہیں۔

اس زلزلے کے نتیجے میں سینکڑوں عمارتیں اور ایک زیر تعمیر پل بھی تباہ ہو گیا ہے۔

تباہ ہونے والے زیر تعمیر پل پر کام کرنے والے مزدور زلزلے کے جھٹکوں اور پل ٹوٹنے کے باعث دریا میں جا گرے۔

حکام کا کہنا ہے کہ وہ متاثرہ علاقوں میں امداد بھجوا رہے ہیں لیکن مواصلاتی مسائل نے تباہی کے بارے میں مکمل اعداد و شمار اکھٹے کرنے کو مشکل کر دیا ہے۔

اسی مرکزی علاقے میں واقع نوتعمیر شدہ دارالحکومت نی پرنتاؤ کے قریبی علاقوں میں زلزلے بعد آنے والے شدید جھٹکوں یا آفٹر شاکس اب بھی محسوس کیے جا رہے ہیں۔

امریکی جغرافیائی سروے کے مطابق اس زلزلے کی شدت ریکٹر سکیل پر چھ اعشاریہ آٹھ تھی اور یہ برما کے دوسرے بڑے شہر منڈالے سے ایک سو بیس کلو میٹر دوری پر واقع علاقے میں آیا۔

امریکی جغرافیائی سروے کے مطابق سوموار کو پانچ اعشاریہ چھ شدت کا ایک اور زلزلہ اسی علاقے میں آیا۔

برما میں زلزلے آنا نسبتاً عام ہے جیسا کہ مارچ دو ہزار گیارہ میں کم از کم پچھتر افراد ایک شدید زلزلے کے نتیجے میں ہلاک ہو گئے تھے جو کہ تھائی لینڈ اور لاؤس کی سرحد کے قریبی علاقوں میں آیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔