عراق: سلسلہ وار بم دھماکوں میں سترہ ہلاک

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 15 نومبر 2012 ,‭ 02:31 GMT 07:31 PST

عراق میں حکام کے مطابق ملک میں نئے اسلامی سال کے آغاز میں سلسلہ وار بم دھماکوں میں کم سے کم سترہ افراد ہلاک اور چونتیس زخمی ہو گئے۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی نے عراقی حکام کے حوالے سے بتایا کہ دارالحکومت بغداد میں چھ جبکہ چار دھماکے دیگر شہروں میں ہوئے۔

حکام کے مطابق عراق کے شہر کرکوک میں تین بم دھماکوں میں کم سے کم پانچ افراد ہلاک ہوئے۔

واضح رہے کہ شعیہ مسلمانوں کے مذہبی کیلنڈر کے مطابق محرم کو خاص اہمیت حاصل ہے۔

محرم کے پہلے دس دنوں میں کروڑوں شعیہ مسلمان پیغمبر اسلام کے نواسے امام حیسن کی جانب سے کربلا کے میدان میں دی جانے والی شہادت کی یاد مناتے ہیں۔

عراق میں موجود شعیہ مسلمانوں کے مذہبی تہواروں پر ان کو سنی شدت پسندوں کی جانب سے اکثر نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

عراق کے شہر کرکوک میں ہونے والے بم دھماکوں کی ذمہ داری ابھی تک کسی گروہ نے قبول نہیں کی۔

کرکوک کی پولیس کے مطابق شہر میں ہونے والے بم دھماکے کردستان ڈیموکریٹک پارٹی کے دفتر کے قریب ہوئے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔