سپین: کیٹالونیا میں علیٰحدگی پسندوں کی کامیابی

آخری وقت اشاعت:  پير 26 نومبر 2012 ,‭ 06:01 GMT 11:01 PST

کیٹالونیا کے صدر آرٹر ماس اپنا ووٹ ڈال رہے ہیں۔

سپین کے علاقے کیٹالونیا کے ووٹروں نے قوم پرست جماعتوں کی پشت پناہی کی ہے تاہم اس علاقے کے صدر کو ووٹ نہیں دیے جو قبل از وقت انتخابات کروانا چاہتے تھے۔

انتخابات کے بعد کیٹالونیا کے صدر آرٹر ماس کی قیادت میں وسط داہنی حکومتی جماعت سی آئی یو نے 135 کے ایوان میں 50 نشسیں جیت کر اپنی اکثریت برقرار رکھی ہے۔ البتہ گذشتہ انتخابات میں اس نے 62 نشستیں حاصل کی تھیں۔

بائیں بازو کی علیٰحدگی پسند جماعت ای آر سی 21 نشستیں لے کر دوسرے نمبر پر آئی ہے۔

دونوں جماعتیں سپین سے الگ ہونے کے لیے ریفرنڈم منعقد کروانا چاہتی ہیں۔

آرٹر مارس نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ اگلے چار برسوں کے اندر علیٰحدگی کے مسئلے پر عوام سے رائے لیں گے۔

’میں آج رات کے نتائج سے خوش ہوں، لیکن اتنا خوش نہیں جتنا ہونا چاہیے تھا۔‘

ماس نے میڈرڈ کی وفاقی حکومت کے ساتھ فنڈز کی فراہمی کے مسئلے پر تنازعے کے بعد قبل از وقت انتخابات کا مطالبہ کیا تھا۔

وفاقی حکومت نے الزام لگایا تھا کہ ماس معاشی بحران سے ناجائز فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں، اور کہا تھا کہ کیٹالان کے قوم پرست اپنے فنڈ ختم کرنے کے بعد بہانے تلاش کر رہے ہیں۔

یورپی رکنیت

"سپین کے بااثر اور مالدارشمال مشرقی علاقوں کو وفاقی حکومت سے رقوم کی فراہمی کے معاملے پر سردمہری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔"

آرٹر ماس

ماس کا کہنا ہے کہ سپین کے بااثر اور مالدارشمال مشرقی علاقوں کو وفاقی حکومت سے رقوم کی فراہمی کے معاملے پر سردمہری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ان کے وسط داہنی کیٹیلان قوم پرست اتحاد (سی آئی یو) کا استدلال ہے کہ کیٹالان صوبے کی نسبت علیٰحدہ ملک کی حیثیت سے یورپی یونین کا بہتر رکن بنے گا۔

بائیں بازو کی قوم پرست جماعت ای آر سی نے ایوان میں اپنی نشستوں کی تعداد دگنی کر لی ہے۔ 2010 میں اس کے پاس دس نشتیں تھیں جب کہ اب اس نے 21 نشستیں حاصل کر لی ہیں۔

ماس کے انتخابی جلوسوں میں یورپی جھنڈا پیش پیش رہتا تھا، اور ان کا کہنا ہے کہ آزاد کیٹالونیا بہت جلد ہی یورپی یونین کا رکن ملک بن جائے گا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔