پیٹریئس سکینڈل، جم کیلی برطرف

آخری وقت اشاعت:  منگل 27 نومبر 2012 ,‭ 11:53 GMT 16:53 PST

جل کیلی کی وجہ سے جنرل پیٹریئس کا سکینڈل منظرِ عام پر آیا تھا۔

جنوبی کوریا اس امریکی خاتون کو ایک اعزازی عہدے سے سبکدوش کر دے گا جن کا نام سابق سی آئی اے کے ڈائریکٹر ڈیوڈ پیٹریئس کے اپنی سوانح نگار پالا براڈویل کے سیکینڈل کے دوران سامنے آیا تھا۔

امریکی ریاست فلوریڈا سے تعلق رکھنے والی جِل کیلی کو اگست میں سیول میں اعزازی کونسلر مقرر کیا گیا تھا۔

انہوں نے ایف بی آئی کو دھمکی آمیز ای میل ملنے کی شکایت کی تھی جس کی وجہ سے جنرل پیٹریئس اور ان کی سوانح نگار پالا براڈویل کے ساتھ تعلقات کا معاملہ منظرِ عام پر آیا تھا۔

جنوبی کوریا کے ایک عہدے دار کا کہنا ہے کہ اس سکینڈل کے بعد یہ مناسب نہیں ہے کہ کیلی اپنی ذمہ داریاں جاری رکھیں۔

وزارتِ خارجہ کے ایک عہدے دار نے خبررساں ادارے اے ایف پی کو بتایا، ’ہم انہیں اپنے عہدے سے سبکدوش کرنے کے لیے تمام ضروری ضوابط پر عمل کر رہے ہیں کیونکہ اس سکینڈل کے بعد ان کا ذمہ داریاں جاری رکھنا مناسب نہیں ہے۔‘

جنوبی کوریا کے ایک خبررساں ادارے نے پیر کی رات نائب وزیرِ خارجہ کم کیو ہیون کے حوالے سے بتایا کہ کیلی نے اپنے عہدے کو ذاتی مفاد کے لیے استعمال کرنے کی کوشش کی تھی۔

"کسی اعزازی مشیر کو زیب نہیں دیتا کہ وہ تجارتی منصوبوں میں ملوث ہو اور اپنا اثر و رسوخ استعمال کرنے کی کوشش کرے۔"

کورین عہدے دار

ایجنسی کے مطابق انہوں نے امریکہ کے دورے کے دوران کہا، ’کسی اعزازی مشیر کو زیب نہیں دیتا کہ وہ تجارتی منصوبوں میں ملوث ہو اور اپنا اثر و رسوخ استعمال کرنے کی کوشش کرے۔‘

امریکہ میں جنوبی کوریا کے 15 اعزازی کونسلر ہیں جنہیں جنوبی کوریا کی تشہیر کرنے کے لیے مبینہ طور پر ڈھائی ہزار ڈالر سالانہ دیے جاتے ہیں۔

اس عہدے میں سفارتی استثنیٰ حاصل نہیں ہوتا، لیکن رپورٹوں میں کہا گیا تھا کہ کیلی نے پولیس کو اپنے گھر میں صحافیوں کی دخل اندازی کے بارے میں شکایت کرتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں سفارتی تحفظ حاصل ہے۔

سی آئی اے جنرل پیٹریئس کے طرزِ عمل کے بارے میں تفتیش کر رہی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔