جنوبی افریقہ: نیلسن مینڈیلا علیل ہو گئے

آخری وقت اشاعت:  اتوار 9 دسمبر 2012 ,‭ 21:33 GMT 02:33 PST

نیلسن مینڈیلا نے بیس سال سے زیادہ قید میں گزارے اور انہیں فروری سنہ انیس سو نوے میں رہائی ملی

جنوبی افریقہ میں حکام کے مطابق ملک کے سابق صدر نیلسن مینڈیلا کو علاج کے لیے ہسپتال داخل کرا گیا جہاں ان کے کچھ ٹیسٹ کیے جائیں گے۔

جنوبی افریقہ کے موجودہ صدر جیکب زوما کے دفتر کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ چورانوے سالہ نیلسن مینڈیلا کی طبعیت ٹھیک تھی اور تشویش کی کوئی بات نہیں۔

جیکب زوما نے اپنے بیان میں سابق صدر نیلسن مینڈیلا کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

نیلسن مینڈیلا نے بیس سال سے زیادہ قید میں گزارے اور انہیں فروری سنہ انیس سو نوے میں رہائی ملی۔

انہیں اپنے ملک پر نسل پرستی کی بنیاد پر قابض سفید فام حکمرانوں کے خلاف پر امن مہم چلانے پر سنہ انیس سو ترانوے میں امن کا نوبل انعام دیا گیا تھا۔

نیلسن مینڈیلا سنہ انیس سو چورانوے سے انیس سو ننانوے کے دوران جنوبی افریقہ کے صدر رہے۔

واضح رہے کہ نیلسن مینڈیلا نے سنہ دو ہزار چار کے بعد سے عوامی مصروفیات کو الودٰع کہہ دیا تھا۔

نیلسن مینڈیلا کو سنہ دو ہزار گیارہ میں سینے میں شدید تکلیف کے باعث ہسپتال داخل کروایا گیا تھا جبکہ رواں برس انہیں پیٹ کی تکلیف کی وجہ سے ہستپال داخل ہونا پڑا تھا۔

دوسری جانب ہسپتال کے حکام کا کہنا ہے کہ نیلسن مینڈیلا کو بڑھتی ہوئی عمر کے ساتھ ساتھ مزید علاج کی ضرورت پڑے گی۔

جوہانسبرگ میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق نیلسن مینڈیلا کےہسپتال داخلے کی وجہ نہیں بتائی گئی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔