ایک صدی بعد پہلی لڑکی کی پیدائش

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 15 دسمبر 2012 ,‭ 06:28 GMT 11:28 PST

آوِن گوینیتھ جنکنز اپنے والد ایمیر اور بڑے بھائی میکہ کے ساتھ۔

برطانیہ کے علاقے ویلز کے جنوب مغرب میں رہائش پذیر ایک خاندان ایک سو تین سال بعد پہلی لڑکی کی پیدائش کی خوشی منا رہا ہے۔

آوِن گوینیتھ جنکنز انیس سو نو کے بعد کارمنتھنشائر میں رہائش پذیر جنکنز خاندان میں پیدا ہونے والی پہلی لڑکی ہیں۔

آوِن کے دادا ہوول جنکنز کا کہنا ہے کہ ’سارہ کے بعد میرے والد اور ان کے بھائیوں کے ہاں صرف لڑکے پیدا ہوئے پھر ہمارے ہاں بھی لڑکے ہی پیدا ہوئے اور اب جا کے میرے بیٹے کے ہاں بیٹی کی پیدائش ہوئی ہے۔‘

یہ خاندان جو کہ امانفورڈ کے قصبے ٹائکروس میں رہتے ہیں کا کہنا ہے کہ انہیں بھی یہ اندازہ نہیں تھا مگر جب انہوں نے اپنے خاندان کی تاریخ کھنگالی تو انہیں اندازہ ہوا کہ یہ کتنی انوکھی پیدائش ہے۔

آوِن کے والد ایمیر نے اعتراف کیا کہا کہ پہلے تو ان کے لیے یہ ایک دھچکہ تھا پھر بعد میں انہوں نے کہا کہ جب آوِن پیدا ہوئی تو انہوں نے اس بارے میں سوچنا اور بات کرنا شروع کیا۔

انہوں نے کہا اس کے بعد ہم نے اپنے خاندان کی تاریخ چھاننا شروع کیا اور ہم پر یہ حقیقت واضح ہوئی کہ یہ ہمارے خاندان میں ایک سو تین سال بعد پہلی لڑکی کی پیدائش ہے۔

آوِن کی پیدائش سوانزی کے سنگلٹن ہسپتال میں ایک ہفتہ قبل ہوئی اور پیدائش کے وقت ان کا وزن آٹھ پاؤنڈز تھا۔

آوِن کی پیدائش سے پہلے سارہ اولون جنکنز اس خاندان میں پیدا ہونے والی آخری لڑکی تھیں جن کی پیدائش اکتوبر انیس سو نو میں ہوئی تھی۔

آوِن کے والد کہا کہنا ہے کہ آوِن ’بہت خوبصورت بچی ہے جو تنگ نہیں کرتی اور رات بھر سوتی ہیں اور ان کی نشونما ان کے بھائی کی نسبت بہتر ہو رہی ہے۔‘

آوِن کی پیدائش سے پہلے سارہ اولون جنکنز اس خاندان میں پیدا ہونے والی آخری لڑکی تھیں جن کی پیدائش انیس سو نو میں ہوئی تھی۔

آوِن کے دادا ہوول جنکنز نے بتایا کہ انہیں معلوم تھا کہ آوِن سے پہلے سارہ اولوِن جنکنز خاندان میں پیدا ہونے والی آخری لڑکی تھیں۔

ہوول کا کہنا ہے کہ وہ اور ان کی بیوی دونوں بہت ہی خوش ہیں اور یہ ایک بہت ہی پیاری بچی ہے جس کی پیدائش پر سب خوشی منا رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔