قدرتی آفات سے مالی نقصان میں کمی

آخری وقت اشاعت:  بدھ 19 دسمبر 2012 ,‭ 18:11 GMT 23:11 PST

سوئس انشورنس گروپ کی جانب سے شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق پوری دنیا میں رواں برس کے دوران قدرتی آفات کی وجہ سے ایک سو چالیس ارب ڈالر کا نقصان ہوا۔

رپورٹ کے مطابق رواں برس امریکہ قدرتی حادثات کی وجہ سے سب سے زیادہ متاثر ہوا جہاں سمندری طوفان سینڈی سے ایک اندازے کے مطابق پینتالیس ارب ڈالر کا نقصان ہوا۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ برس دنیا میں قدرتی حادثات کے باعث رواں برس کے مقابلے میں خاصا کم نقصان ہوا۔

گزشتہ برس دنیا میں تین سو پچاس ارب ڈالر سے زیادہ کا نقصان ہوا تھا۔ اس نقصان کی بڑی وجہ گزشتہ برس جاپان میں آنے والا زلزلہ اور سمندری طوفان سونامی تھا۔

رپورٹ کے مطابق رواں برس کے جاری کردہ اعداد وشمار حالیہ اوسط سے زیادہ ہیں جس کی وجہ سےانشورنس کمپنیوں کو پینسٹھ ارب ڈالرز کی ادائیگیاں کرنا پڑیں۔

رپورٹ کے مطابق رواں برس پوری دنیا میں ہو نے والے پانچ بڑے نقصانات امریکہ میں ہوئے۔

امریکی سمندری طوفان سینڈی نے کسانوں اور انشورنس کمپنیوں کو گیارہ ملین ڈالرز سے زائد کا نقصان پہنچایا۔

رپورٹ کے اعداد وشمارکے مطابق رواں برس قدرتی حادثات کی وجہ سے گیارہ ہزار سے زیادہ افراد ہلاک ہوئے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔