افغانستان سے برطانوی افواج کا انخلاء

آخری وقت اشاعت:  بدھ 19 دسمبر 2012 ,‭ 16:08 GMT 21:08 PST

سن دو ہزار ایک سے ابتک افغانستان میں چار سو بائیس برطانوی فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔

برطانیہ کے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے اراکین پارلیمان کو بتایا ہے کہ آئندہ سال تین ہزار آٹھ سو برطانوی فوجیوں کا افغانستان سے انخلاء ہو گا۔

رواں سال کرسمس سے قبل افغانستان میں برطانوی فوجیوں کی تعداد ساڑھے نو ہزار سے کم ہو کر نو ہزار ہو جائے گی۔

وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے اراکینِ دارالعوام کو بتایا کہ دو ہزار تیرہ کے اختتام تک افغانستان میں برطانوی فوجیوں کی تعداد نصف رہ جائے گی۔

افغان افواج کو حفاظت کی ذمہ داری سونپنے کے بعد دو ہزار چودہ کے اواخر میں نیٹو افواج کا آپریشن بھی مکمل ہو جائے گا۔

ڈیوڈ کیمرون نے اراکین دارالعوام کو بتایا کہ’ہم دو ہزار تیرہ اور دو ہزار چودہ میں دو مساوی سطحوں پر اپنے فوجی دستوں کی واپسی ممکن بنائیں گے ‘

اس سے پہلے افغان صدر حامد کرزئی کے ترجمان نے افغان صدر اور برطانوی وزیراعظم کے مابین ٹیلی فون پر ہونے والی بات چیت کی تصدیق کی تھی۔

افغان صدارتی محل سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق ’ دونوں رہنماؤں کے مابین قیامِ امن، سکیورٹی کی منتقلی اور اگلے ماہ ہونے والے سہ فریقی مزاکرات کے ایجنڈے پر بات چیت ہوئی۔‘

افغانستان سے فوجوں کی واپسی کا فیصلہ آج نیشنل سکیورٹی کونسل کے اجلاس میں ہوا جس میں برطانوی سیاست دان، عسکری قیادت اور حکام نے فوجوں کی واپسی کے منصوبے پر رضامندی ظاہر کی۔

برطانیہ کے وزیراعظم نے امریکی صدر براک اوباما سے بھی افغانستان کے صورتحال پر بات چیت کی جس میں دونوں رہنماؤں نے اگلے سال کے اختتام تک افغانستان سے نیٹو کے لڑاکا دستوں کے انخلاء پر رضامندی ظاہر کی گئی۔

رواں سال افغانستان سے تئیس ہزار امریکی فوجیوں کی واپسی کے بعد افغانستان میں اب امریکی فوجیوں کی تعداد ساٹھ ہزار ہے۔

ڈوائنگ سٹریٹ کے ترجمان کے مطابق ’برطانیہ کے اس فیصلے سے دیگر بین الاقوامی فوجوں کو بھی اگلے سال فوجیں واپس بلانے کے مزید مواقع ملیں گے۔جامع منصوبہ بندی کے لیے گہرے روابط اور سیاسی استحکام کے لیے مشترکہ کوششوں پر رضامندی ظاہر کی گئی ہے۔ پاکستان کے ساتھ سہ فریقی بات چیت میں افغانستان کے تعاون اور اس کے ہمسایہ ممالک کے ساتھ بات چیت پر بھی اتفاق کیا گیا۔‘

ڈیوڈ کیمرون نے کہا کہ وہ پُر اعتماد ہیں کہ جولائی دو ہزار چودہ تک افغانستان سے برطانیہ کی فوج کی واپسی مکمل ہو جائے گی۔

یاد رہے کہ سن دو ہزار ایک سے ابتک افغانستان میں چار سو بائیس برطانوی فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔