امریکی معاشی بحران: وقت کم رہ گیا ہے

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 28 دسمبر 2012 ,‭ 01:49 GMT 06:49 PST

صورتِ حال کی سنگینی کے پیشِ نظر صدر اوباما کو اپنی کرسمس کی تعطیلات مختصر کرنا پڑیں

امریکی سینٹ میں ڈیموکریٹک پارٹی کے رہنماؤں نے کہا ہے کہ معاشی بحران، جسے فسکل کلف (Fiscal Cliff) کا نام دیا جا رہا ہے، سے نمٹنے کے لیے وقت تیزی سے ختم ہورہا ہے اور سیاستدانوں کواندرونی اختلافات میں پڑنے کی بجائے کسی نتیجے پر پہنچ جانا چاہیے۔

ری پبلکن سینیٹر ہیری ریڈ نے سینیٹ میں کہا کہ ایسا نظر آتا ہے کہ سال کے اختتام سے قبل کسی سمجھوتے تک پہنچنے کے لیے کافی وقت نہیں بچا۔

سینیٹر ہیری ریڈ کے مطابق ڈیموکریٹس اور ری پبلکنز کو دسمبر 31 تک معاشی بحران سے نمٹنے کا حل تلاش کر لینا چاہیے کیونکہ اس کے بعد ٹیکسوں میں اضافہ اور اخراجات میں کٹوتی خودکار طریقے سے نافذالعمل ہو جائے گی۔

امریکہ کا یہ معاشی بحران اتنا سنگین ہے کہ امریکی صدر کو اپنی کرسمس کی تعطیلات مختصر کرنا پڑیں۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اگر اس مسئلے کا حل نہ تلاش کیا گیا تو امریکہ کو معاشی بحران کا سامنا کرنا پڑے گا۔

صدر براک اوباما نے مذاکرات میں پیش رفت کے بارے میں دریافت کرنے کے لیے بدھ کے روز کانگریس کے رہنماؤں سے فون پر بات کی تھی۔

ایوان میں اکثریتی رہنما ایرک کینٹر نے کہا کہ ایوان کا اجلاس دو جنوری تک جاری رہے گا، تاہم انھوں نے ممکنہ ووٹنگ کی تفصیل نہیں بتائی۔

نومبر کے انتخابات کے بعد منتخب ہونے والی 113 ویں کانگریس کا اجلاس تین جنوری کو منعقد کیا جائے گا۔

حالیہ ہفتوں میں معاشی بحران پر بحث و تکرار سے واشنگٹن دو حصوں میں بٹ کر رہ گیا ہے۔ صدر اوباما اور ایوان کے سپیکر جان بینر کرسمس سے پہلے کسی سمجھوتے پر نہ پہنچ سکے تھے۔

صدر اس بات کی یقین دہانی چاہتے ہیں کہ چار لاکھ ڈالر سالانہ سے کم آمدنی والے امریکیوں کے ٹیکسوں میں اضافہ نہ ہو۔ ان کا اصرار ہے وہ کسی بھی معاہدے میں ٹیکسوں سے ہونے والی آمدنی میں اضافہ کرنا چاہتے ہیں۔

تاہم بہت سے ری پبلکن نئے ٹیکسوں کے خلاف ہیں۔ جان بینر کا پیش کردہ منصوبہ گذشتہ ہفتے سینیٹ میں ناکام ہو گیا تھا۔ اس میں صرف ان لوگوں کے ٹیکسوں میں اضافہ کیا گیا تھا جن کی آمدن دس لاکھ ڈالر سالانہ سے زیادہ ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔