انٹرنیٹ کی آزادی کے کارکن ایرون کی خودکشی

آخری وقت اشاعت:  اتوار 13 جنوری 2013 ,‭ 16:22 GMT 21:22 PST
آرن سوارٹز

آرن سوارٹز کے خلاف ہیکنگ کے معاملات درج ہیں۔

انٹرنیٹ کی آزادی کے سرگرم کارکن اور ریڈٹ نامی ویب سائٹ کے ڈیولیپ کرنے والے ایرون سوارٹز کا چھبیس سال کی عمر میں انتقال ہو گیا ہے۔

ان کے رشتے دار اور نیویارک ریاست کے طبی جانچ کرنے والوں نے کہا ہے کہ کمپیٹور پروگرامر ایرون نے نیویارک میں اپنے گھر میں اپنی جان لے لی۔

ان کی نعش جمعے کو ان کے اپارٹمنٹ سے برامد کی گئی۔

ایرون سوارٹز نے بچپن سے ہی کمپیوٹر پروگرامنگ کرنا شروع کر دیا تھا اور انھوں نے چودہ سال کی عمر میں کچھ لوگوں کے ساتھ مل کر آر ایس ایس یعنی رچ سائٹ سمری کے شروعاتی پروگرام لکھے۔

انٹرنٹ کی معروف شخصیات اور ان کے دوستوں نے اپنے بلاگ اور ٹوئٹز کے ذریعے ان کو خراج تحسین پیش کیا ہے۔

ریڈٹ ویب سائٹ سے علیحدہ ہونے کے بعد انھوں نے انٹرنٹ کی آزادی کی وکالت شروع کر دی تھی۔ موت سے قبل ان پر ہیکنگ الزامات تھے۔

وہ سنسرشپ کے خلاف لابی کرنے والے گروپ ڈیمانڈ پروگریس مہم گروپ کے بانیوں میں سے تھے۔

"ایرن مر گیا، دنیا حیرت زدہ ہے کہ ہم نے ایک معمر دانشور کو کھو دیا ہے۔ ہیکروں کے حقوق کے ایک حامی کو ہم نے کھو دیا، والدین نے اپنا ایک بچہ کھو دیا۔ ہمیں گریہ کرنا چاہیے"

ٹم برنرز لی

ان پر جے ایس ٹی او آر یا جے سٹور کی آن لائن آرکائیو سے ہیک کرکے لاکھوں کی تعداد میں تعلیمی مواد ڈاؤن لوڈ کرنے کا الزام ہے۔ وکیل استغاثہ کا کہنا ہے کہ وہ ان مواد کو مفت میں تقسیم کرنا چاہتے تھے۔

بہرحال مسٹر سوارٹز نے گذشتہ سال ہونے والی شروعاتی شنوائی میں ان الزامات کو مسترد کر دیا تھا لیکن ان کے خلاف وفاقی سطح کے مقدمے کی شنوائی آئندہ ماہ شروع ہونے والی تھی۔

مسٹر سوارٹز کے وکیل ایلیٹ آر پیٹرز نے ایک ای میل کے ذریعے ایم آئی ٹی یونیورسٹی کے اخبار ’دی ٹیک‘ پر اپنے مؤکل کی موت کی تصدیق کی ہے۔

انھوں نے لکھا ہے کہ ’آپ نے جو دلدوز دکھ بھری خبر سنی ہے، افسوس کہ وہ سچی ہے‘۔

نیویارک کی میڈیکل جانچ کے ایک ترجمان نے خبررساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کو بتایا کہ مسٹر سوارٹز نے پھانسی لگا کر خود کشی کر لی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔