مالی: امریکی فوج نے ٹریننگ میں غلطی تسلیم کی

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 25 جنوری 2013 ,‭ 12:52 GMT 17:52 PST
مالی

مالی کی فوج پر انسانی حقوق کی پامالی کے الزامات لگائے گئے ہیں۔

افریقہ میں امریکی فوج کے کمانڈر نے کہا ہے کہ مالی فوج کی ٹریننگ میں پینٹاگون سے غلطی ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ مالی کی فوج ملک کے شمالی حصے سے اسلام پسند باغیوں کو نکالنے کی کوششوں میں مصروف ہے۔

امریکی افریکوم کے جنرل کارٹر ہیم نے کہا ہے کہ امریکی فوجی مالی کے فوجیوں کو ’اخلاقی اور فوجی قدروں‘ کی سطح پر تربیت دینے میں ناکام رہے ہیں۔

یہ باتیں انھوں نے فرانسیسی مہم میں مالی کے سرکاری فوجیوں کی بے ضابطگیوں کی شکایت کے بعد کہی ہے۔

بہرحال انسانی حقوق کی تنظیموں نے مالی کے فوجیوں پر عربوں اور نسلی توریگ قبیلوں کے لوگوں کے قتل کا الزام لگایا ہے۔

ان دعوؤں کے بعد مغربی ممالک بطور خاص امریکہ میں اس بات پر گہری تشویش ظاہرکی جارہی ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ مالی اور دوسرے پڑوسی ممالک میں کئی سال سے فوجیوں کو عسکری تربیت دے رہا ہے۔

جنرل ہیم نے کہا کہ مالی کے فوجیوں کو حربی تربیت تو کافی دی گئی لیکن ان کی اخلاقی تربیت خاطرخواہ نہیں کی جا سکی۔

انھوں نے واشنگٹن کی ہووارڈ یونیورسٹی میں ایک فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہا ’ہم لوگوں نے اپنی تربیت کو بطور خاص حربی اور تکنیکی معاملوں تک مخصوص رکھا تھا اور ہم نے شاید زیادہ وقت اخلاقیات اور فوجی قدروں کی تربیت پر نہیں دیا۔‘

جنرل ہیم نے کہا کہ مالی فوج میں بحال ہونے والے فوجیوں کو یہ نہ بتایا جا سکا کہ ’جب آپ اپنے ملک کی وردی پہنتے ہیں آپ یہ ذمہ داری لیتے ہیں کہ آپ ملک کا دفاع کریں گے اور قانونی طور پر آنے والی شہریوں کی حکومت کے پابند ہونگے اور ملک کے قانون کا پاس رکھیں گے‘۔

انھوں نے مزید کہا کہ ’ہمیں جس سطح پر اس طرح کی ٹریننگ دینی چاہیے تھی اس سطح پر ہم نہیں دے سکے۔‘

جنرل ہیم

امریکہ مالی اور دوسرے پڑوسی ممالک میں کئی سال سے فوجیوں کو ٹریننگ دے رہا ہے

مالی کی فوج نے مارچ انیس سو بارہ میں تختہ پلٹ کیا تھا اور افراتفری کے اس ماحول میں اسلام پسندوں اور سیکولر باغیوں کو ملک کے پورے شمالی حصے پر قبضہ کرنے کا موقع مل گیا تھا۔

واضح رہے کہ شمالی علاقے سہار ریگستان کا حصہ ہیں جو فرانس سے بڑا رقبہ ہے۔

دریں اثناء ملک کے شمالی شہر گاؤ پر فضائی حملوں کی خبریں موصول ہو رہی ہیں۔

باغیوں کا یہ مضبوط گڑھ حالیہ ملٹری آپریشن کے تیسرے ہفتے میں فضائیہ کا نشانہ بنایا گیا۔

اسلام پسندوں نے گزشتہ سال مالی کے شمالی علاقوں پر قبضہ کرلیا تھا اور وہاں کے باشندوں پر شرعی نظام نافذ کر دیا تھا۔

فرانس نے گیارہ جنوری کو جنوب کی جانب ان کی پیش قدمی کو روکنے کے لیے مداخلت کی تھی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔