مسولینی اچھے رہنما تھے، برلسکونی

آخری وقت اشاعت:  پير 28 جنوری 2013 ,‭ 21:44 GMT 02:44 PST

سلویو برلسکونی کی عمر تقریباً 76 برس ہے اور انہوں نے نومبر 2011 میں اٹلی میں معاشی مشکلات کی وجہ سے استعفیٰ دیا تھا

اٹلی کے غیر ذمہ دارانہ بیان دینے والے سابق وزیر اعظم سیلویو برلسکونی نے بینیتو مسولینی کی تعریف کرکے ایک اور تنازع کھڑا کر دیا ہے۔

برلسکونی نے ہولوکاسٹ میموریل ڈے یا یہودیوں پر ہونے والے مظالم کی یاد میں خصوصی دن کے موقع پر میلان میں بات کرتے ہوئے کہا کہ بینیتو مسولینی نے یہودیوں کے خلاف قوانین بنا کر غلطی کی تھی لیکن اس کے علاوہ وہ ایک اچھے رہنما تھے۔

انہوں نے کہا کہ’مسولینی کی حکومت نے ہٹلر کے خوف سے ان کی مخالفت کرنے کے بحائے ان کے ساتھ اتحاد کرلیا تھا۔‘

سیلویو برلسکونی اس وقت ایک ایسے اتحادی جماعتوں کی قیادت کر رہے ہیں جن کا ماضی فاشسٹ یا فسطائی اصولوں سے جڑا ہے۔

اٹلی میں 1938 میں بنائے گئے قوانین کے تحت یہودویوں پر یونیورسٹیوں اور دوسرے پیشوں میں جانے پر پابندی لگائی گئی تھی۔ان قوانین کی طرف اشارہ کرتے ہوئے برلسکونی نے کہا کہ’ نسل پرستی کی بنیاد پر قوانین بنانا بینیتو مسولینی کی بڑی غلطی تھی لیکن باقی کاموں میں وہ بہت اچھے تھے۔‘

" نسل پرستی کی بنیاد پر قوانین بنانا بینیتو موزولینی کی بڑی غلطی تھی لیکن باقی کاموں وہ بہت اچھے تھے"

اٹلی کے سابق وزیر اعظم، سیلویو برلسکونی

بائیں بازو کی ڈیموکریٹک پارٹی(ڈی پی) نے برلسکونی کے اس تبصرے کی فوری طور پر مزمت کی۔

پی ڈی کے ترجمان مارکو میلونی نے کہا کہ’ہماری ریاست کی بنیاد نازی فاشزم کے خلاف جدوجہد ہے۔یہ گفتگو ناقابلِ برداشت ہے اور ایسی بات کرنا کسی جمہوری قوت کے سربراہ کو زیب نہیں دیتا۔‘

ماضی میں میں بھی سیلویو برلسکونی اس قسم کی باتیں اور حرکات کرتے رہے ہیں۔ ایک دفعہ ان کے بہت تیز آواز میں بولنے پر برطانیہ کی ملکہ نے بھی ناراضگی کا اظہار کیا تھا۔ ایک اور بیان میں انہوں نے براک اوباما کو نوجوان، ہونہار اور دھوپ سے رنگا گیا قرار دیا تھا۔

انہوں نے چین کے کمیونسٹ رہنما ماؤ زے تنگ کے بارے میں کہا تھا کہ وہ زمینوں کو زرخیز بنانے کے لیے بچوں کو ابالتے تھے۔

برلسکونی نے کہا کہ موزولینی کی حکومت نے ہٹلر کے خوف سے ان کی مخالفت کرنے کے بحائے ان کے ساتھ اتحاد کرلیا تھا

سلویو برلسکونی کی عمر تقریباً 76 برس ہے اور انہوں نے نومبر 2011 میں اٹلی میں معاشی مشکلات کی وجہ سے استعفیٰ دیا تھا۔انہیں گذشتہ اکتوبر میں ٹیکس فراڈ کے مقدمے میں مجرم قرار دیا گیا جس کے خلاف وہ اپیل کر رہے ہیں۔

ان پر ایک کم عمر طوائف کے ساتھ جنسی تعلق کے الزام میں بھی مقدمہ چلایا جا رہا ہے۔ وہ ان الزامات کی تردید کرتے ہیں۔

سیلویو برلسکونی کی سیاسی جماعت پیپل آف فریڈم (پی ڈی ایف) کو امید ہے کہ وہ 24 اور 25 فروری کو ہونے والے انتخابات کے بعد ایک دوسری جماعت کے ساتھ مل کر مرکز کی طرف مائل دائیں بازو کے اتحادیوں کی حکومت بنا لیں گے۔ تاہم اس اتحاد کے وزارتِ عظمیٰ کے امیدوار کا نام سامنے نہیں آیا۔

وہ پہلے ہی سے تین مخلتف ادوار میں اٹلی کے وزیر اعظم رہ چکے ہیں اورخیال کیا جاتا ہے کہ انہوں نے اپنے کاروبار کو بڑھا کر بہت دولت کمائی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔