’حزب اللہ کو دہشت گرد تنظیم قرار دیا جائے‘

آخری وقت اشاعت:  بدھ 6 فروری 2013 ,‭ 01:04 GMT 06:04 PST

اسرائیل کے وزیر اعظم بنیامن نیتن یاہو نے عالمی رہنماؤں سے حزب اللہ کو دہشت گرد جماعت قرار دینے کی استدعا کی ہے۔

بنیامن نیتن یاہونے کہا کہ حزب اللہ نے دہشت گردوں کا بین الاقوامی نیٹ ورک قائم کر رکھا ہے اور وہ درجنوں ممالک پر حملے کرنے کا منصوبہ بندی کر رہی ہے۔

اسرائیلی وزیر اعظم کے مطابق وقت آ گیا ہے کہ حزب اللہ کو دہشت گرد تنظیم قرار دیتے ہوئے اس کے خلاف کارروائی کی جائے۔

واضح رہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم کا یہ بیان بلغاریہ کے اس بیان کے چند گھنٹوں کے بعد سامنے آیا ہے جس میں بلغاریہ نے کہا تھا کہ گزشتہ سال سیاحتی مقام پر ہونے والے بس دھماکے میں حزب اللہ ملوث تھی۔

اس حملے میں پانچ اسرائیلی سیاحوں سمیت ایک بس ڈرائیور ہلاک ہوا تھا۔

بلغاریہ کا کہنا ہے کہ اس حملے میں حزب اللہ کے دو ارکان ملوث تھے۔

بلغاریہ نے یہ اعلان اس وقت کیا جب تفتیش کاروں نے اس واقعے کی رپورٹ ملک کی قومی سلامتی کونسل کو پیش کی۔

دوسری جانب حزب اللہ نے اس الزام پر کوئی بیان جاری نہیں کیا۔

دریں اثناء برسلز میں یورپی یونین کی خارجہ امور کی سربراہ کیتھرین ایشٹن کے دفتر سے جاری ہونے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ بلغاریہ کی انکوائری رپورٹ پر مذید غور کرنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ یورپی یونین اور اس کے ارکان بلغاریہ کی رپورٹ کا مناسب جواب دینے کے لیے مذید سوچ بچار کریں گے۔

اطلاعات کے مطابق لنبان کے وزیر اعظم نے اس حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان کا ملک بلغاریہ کے ساتھ تعاون کرنے کے لیے تیار ہے۔

ادھر واشنگٹن میں امریکہ کی انسدادِ دہشت گردی کے سربراہ جان برینن نے کہا کہ حزب اللہ نہ صرف یورپ بلکہ پوری دنیا کے لیے بڑھتا ہوا خطرہ ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔