شام: حلب پر راکٹ حملوں میں بارہ شہری ہلاک

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 23 فروری 2013 ,‭ 23:46 GMT 04:46 PST
حلب

حلب شہر کو پہلے بھی کئی مرتبہ نشانہ بنایا جا چکا ہے

شام میں سرگرم کارکنوں کا کہنا ہے کہ شمالی شہر حلب کے رہائشی علاقوں میں تین راکٹ گرنے سے کم از کم بارہ شہری ہلاک ہو گئے ہیں۔

آن لائن پر پوسٹ کیے جانے والے ویڈیو فوٹیج میں حملے کے بعد کا منظر دکھائے جانے کا دعویٰ کیا گیا ہے۔ جس میں لوگ زخمیوں کو لے جا رہے ہیں اور ہر طرف ملبہ نظر آ رہا ہے۔

سرگرم کارکنوں کا کہنا ہے کہ علاقے میں کئی خاندان ملبے کے نیچے دب گئے ہیں۔

دریں اثنا، حزب اختلاف کے سیاست دانوں کا کہنا ہے کہ ان میں باغیوں کے قبضے والے علاقوں میں حکومت بنانے پر اتفاق ہو گیا ہے۔

حزبِ مخالف کے اتحاد سیریئن نیشنل کولیشن نے جو قاہرہ میں ملاقات کر رہا ہے، کہا ہے کہ وہ دو مارچ کو ترکی کے شہر استنبول میں پھر ملیں گے جہاں وزیر اعظم کا نام تجویز کیا جائے گا۔

اقوام متحدہ کے مطابق گزشتہ دو برسوں میں، جب سے صدر بشار الاسد کے اقتدار کے خلاف شورش شروع ہوئی ہے، شام میں کم از کم ستر ہزار افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

تازہ ترین حملے کی وجوہات واضح نہیں ہیں، اور یہ بھی واضح نہیں کہ میزائل کس کی طرف سے پھینکا گیا۔

اس ہفتے کے اوائل میں کارکنوں نے حکومتی افواج پر سکڈ میزائل کی قسم کے روسی ساختہ میزائل حلب کے کئی علاقوں میں پھینکنے کا الزام لگایا تھا۔

تازہ ترین ویڈیو فوٹیج میں مبینہ طور پر جائے وقوع کے مناظر دکھائے گئے ہیں۔ لیکن اندھیرے کی وجہ سے راکٹوں کی قسم یا حجم بتانا مشکل ہے۔

بارا الیوسف نامی ایک کارکن نے خبر رساں ادارے رائٹرز کو بتایا کہ ایک راکٹ نے تیس کے قریب گھروں تباہ کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ’اسے بیان نہیں کیا جا سکتا، یہ ایک خوفناک منظر ہے۔‘

برطانیہ میں قائم تنظیم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق بارہ لاشوں کو ملبے کے نیچے سے نکالا جا چکا ہے اور پچاس سے زائد افراد زخمی ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔