چین: موجودہ قیادت کا آخری مرحلہ شروع

آخری وقت اشاعت:  منگل 5 مارچ 2013 ,‭ 13:07 GMT 18:07 PST
چین کے وزیر اعظم وین جیا باؤ کا پارلیمان سے خطاب

چین میں یہ موجودہ قیادت میں شروع ہونے والا آخری اجلاس ہے

چین کے وزیر اعظم وین جیا باؤ نے اپنے دور کے آخری پارلیمانی اجلاس کا افتتاح کیا ہے۔

اس کے بعد کلِک چین کی قیادت تبدیل ہو جائے گی۔ وزیر اعظم لی کییانگ وزیر اعظم بنیں گے جبکہ کلِک کمیونست جماعت کے رہنما شی جِنگ پِنگ ملک کی صدارت سنبھالیں گے۔

چینی رہنما نے پارلیمان کے سالانہ اجلاس میں حکومت کی رپورٹ پیش کرتے ہوئے وعدہ کیا کہ ترقی کی رفتار کو مستحکم رکھا جائے گا، بدعنوانی کو ختم کرنے کی کوششیں جاری رکھی جائیں گی اور فلاحی نظام کو بہتر بنایا جائے گا۔

پارلیمان میں وزیر اعظم کی رپورٹ پیش کرنا ایک روایت ہے اور اس میں حکومت کی کامیابیوں اور اہداف کی تفصیل بتائی جاتی ہے۔ یہ رپورٹ پارٹی قیادت منظور کرتی ہے۔

چینی رہنما نے اس مرتبہ انتیس صفحات پر مشتمل رپورٹ میں ترقی کی رفتار کا ہدف سات عشاریہ پانچ فیصد مقرر کیا اور نوے لاکھ نئی ملازمتوں کا وعدہ کیا ہے۔

چینی رہنما نے اس بات پر زور دیا کہ لوگوں کی قُوت صرف میں اضافہ بہت اہم ہے کیونکہ یہ اقتصادی ترقی کے طویل عرصے کے منصوبے کا بنیادی پہلو ہے۔

مبصرین اب یہ دیکھنا چاہ رہے ہیں کہ صدر اور وزیر اعظم کی تبدیلی کے بعد حکومت کے دوسرے اہم عہدوں پر کن کن لوگوں کو تقرر کیا جائے گا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔