ہنگری: لوگوں کی مدد کے لیے ٹینک سڑکوں پر

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 16 مارچ 2013 ,‭ 02:24 GMT 07:24 PST

یورپی ملک ہنگری میں حکام کو شدید برف باری کے نتیجے میں سڑکوں پر پھنسے افراد تک پہنچنے کے لیے ٹینکوں کا استعمال کرنا پڑا۔

شدید برفباری کے نتیجے میں ہنگری کے دارالحکومت بڈاپسٹ کو ویانا سے ملانے والی موٹر وے ایم ون پر ہزاروں کی تعداد میں گاڑیاں پھنس گئی تھیں اور گاڑیوں میں سوار زیادہ تر افراد جمعرات کی شام سے امداد کے منتظر تھے۔

حکومت کو ان افراد تک پہنچنے کے لیے ٹی 72 نامی جنگی ٹینک روانہ کرنا پڑے اور وہ برف سے ڈھکی موٹر وے کے ساتھ چلتے ہوئے متاثرہ لوگوں تک پہنچے۔

ایم ون موٹر وے پر شدید برفباری کے نتیجے میں کئی حادثے بھی پیش آئے ہیں۔

جمعہ کو وزارتِ داخلہ نے موبائل فون کے تمام صارفین کو ایک پیغام بھیجا جس میں لوگوں سے کہا گیا کہ وہ اپنی گاڑیوں کو ہیٹر سے گرم کر کے ان میں اس وقت تک رہیں جب تک پیٹرول ختم نہیں ہو جاتا اور پیٹرول ختم ہونے کی صورت میں قریبی دوسری گاڑی میں چلے جائیں۔

شدید برفباری کے نتیجے میں لوگ گاڑیوں میں محصور ہو کر رہ گئے

سو کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتاری سے چلنے والی برفانی ہوا اور ایک میٹر سے زائد برفباری نے نظام زندگی کو بری طرح متاثر کیا ہے۔

بڈاپسٹ میں بی بی سی کے نامہ نگار نِک تھراپ کے مطابق ملک میں جعمہ کو قومی تعطیل کی وجہ سے بڑی تعداد میں لوگوں سفر کر رہے تھے۔

جنوب مشرقی پولینڈ میں بھی شدید برفباری کے نتیجے میں کئی حادثات پیش آئے ہیں جبکہ سلوواکیہ میں طوفانی ہواؤں سے بجلی فراہم کرنے والے نظام کو نقصان پہنچا ہے اور اس وقت انیس ہزار افراد بجلی سے محروم ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔