’صحت کے اہلکاروں کو جاسوسی کے لیے استعمال نہ کریں‘

آخری وقت اشاعت:  پير 18 مارچ 2013 ,‭ 15:59 GMT 20:59 PST

پاکستان میں پولیو ویکسین مہیا کرنے والے صحت کے اہلکاروں کو نشانہ بنایا گیا ہے

مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں انسدادِ پولیو کے سلسلے میں مذہبی علماء کی ایک کانفرنس نے ایک مذمتی قراراد منظور کرتے ہوئے کہا ہے کہ صحت کے اہلکاروں کا جاسوسی کی کارروائیوں میں استعمال کیا جانا غلط ہے۔ علما کانفرنس نے عالمی ادارۂ صحت اور یونیسف سے کہا ہے کہ وہ اقوام عالم تک پیغام پہنچائیں کہ کوئی بھی ملک صحتِ عامہ کی کارروائی کو کسی اور مقصد کے لیے استعمال نہ کرے۔

تاہم علما نے کہا کہ صحت کے اہلکاروں پر حملے اسلامی تعلیمات کے منافی ہیں جن کی انتہائی شدت سے مذمت ہونی چاہیے۔

علما کانفرنس نے اتفاق کیا کہ پولیو ویکسین میں نہ تو کوئی اسلامی لحاظ سے حرام اجزا ہیں اور نہ ہی بانجھ پن پیدا کرنے والی کوئی چیز ہے۔

اس کانفرنس میں اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا کہ اسلام کا نام استعمال کر کے پولیو مہم کے بارے میں غلط تاثرات پیدا کیے جا رہے ہیں۔

کانفرنس کے شرکا نے پولیو کو امتِ مسلمہ کے لیے ایک بڑا خطرہ قرار دیا اور اس بیماری سے دو ہزار چودہ تک مکمل چھٹکارہ حاصل کرنے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔

علما کا کہنا تھا کہ پولیو سے اپنے بچوں کو بچانا تمام مسلم والدین کی مذہبی ذمہ داری ہے۔

پولیو ایک ناقابل ِ علاج مرض ہے جس کا تین ممالک کے علاوہ دنیا کے تمام ممالک میں خاتمہ ہو چکا ہے۔ وہ تین ممالک جہاں یہ مرض ابھی بھی موجود ہے وہ نائیجیریا، پاکستان اور افغانستان ہیں۔

انہی ممالک میں حال ہی میں ایسے واقعات بھی پیش آئے ہیں جن میں پولیو ویکسین مہیا کرنے والے محکمۂ صحت کے اہلکاروں کو نشانہ بنایا گیا اور چند واقعات میں تو ان کی ہلاکتیں بھی ہوئیں۔

بعض عناصر کا کہنا ہے کہ پولیو ویکسین مسلم آبادی کو کم کرنے کے لیے ایک مغربی سازش ہے۔ اس تاثر کو مسلم ممالک کی حکومتوں اور مذکورہ کانفرنس کے علما نے بھی رد کیا ہے۔

کانفرنس کے شرکا نے عالمی ادارہِ صحت اور یونیسیف کی کوششوں کو سراہتے ہوئے اس بات کی تائید کہ شکیل آفریدی کبھی بھی ان اداروں کے ساتھ کسی بھی طور سے منسلک نہیں تھے اور نہ ہی ان اداروں کے اہلکاروں کو ایبٹ آباد میں ہونے والی کارروائیوں کی معلومات تھیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔