غزہ فلوٹیلا: اسرائیل کی ترکی سے معذرت

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 22 مارچ 2013 ,‭ 16:56 GMT 21:56 PST

اسرائیل کے وزیر اعظم بین یامین نیتن یاہو نے 2010 میں ترکی کے فلوٹیلا پر اسرائیلی کمانڈوز کی کارروائی پر ترکی سے معذرت کی ہے۔

یاد رہے کہ اکتیس مئی 2010 کو سپیڈ بوٹس اور ہیلی کاپٹرز پر سوار اسرائیلی فوج نے بین الاقوامی پانیوں میں موجود امدادی قافلے کی چھ کشتیوں میں سے سب سے بڑی کشتی ماوی مرمرا پر دھاوا بول دیا تھا اور اس کارروائی میں آٹھ ترک اور ایک ترک نژاد امریکی امدادی کارکن ہلاک ہوا تھا۔

اسرائیلی وزیر اعظم نے ترکی کے وزیر اعظم سے اسرائیل اس دھاوے کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے آٹھ ترک باشندوں کے ورثاء کو زرِ تلافی ادا کرنے پر بھی اتفاق کیا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل اسرائیلی وزیر اعظم نے اس واقعے پر افسوس کا اظہار کیا تھا۔

اسرائیلی اور ترکی کے درمیان اس پیش رفت میں امریکی صدر براک اوباما نے اپنے دورہِ اسرائیل کے دوران اہم کردار ادا کیا۔

اسرائیلی وزیر اعظم کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں وزرائے اعظم کی ٹیلیفون پر بات ہوئی۔ اس بات چیت کے دوران اسرائیلی وزیر اعظم نے دونوں ممالک کے درمیان کشیدہ تعلقات پر افسوس کا اظہار کیا اور دونوں ممالک کے درمیان مسائل کو حل کرنے کا اعادہ کیا تاکہ خطے میں امن اور استحکام پیدا ہو۔

’وزیر اعظم نے یقین دلایا کہ ماوی مرمرا کا واقعہ غیر ارادی تھا اور اسرائیل اس کے نتیجے میں جانی نقصان پر معذرت خوا ہے۔‘

بیان میں مزید کہا گیا ہے ’اسرائیل کی تحقیقات سے معلوم چلا ہے کہ آپریشنل غلطیاں سرزد ہوئی ہیں۔ ان غلطیوں کے باعث جانی نقصان پر اسرائیلی وزیر اعظم ترکی کی عوام سے معذرت کرتے ہیں اور ورثاء کو زرِ تلافی دینے پر آمادہ ہیں۔‘

ترکی نے فریڈم فلوٹیلا پر اسرائیلی حملے کے بعد اس سے اپنے سفارتی تعلقات منقطع کر لیے تھے۔

ترکی کا مطالبہ ہے کہ اسرائیل اپنے اس عمل پر معافی مانگے جبکہ اسرائیلی حکومت معافی مانگنے پر تیار نہیں تاہم اس کا کہنا ہے کہ زرِ تلافی کی ادائیگی ممکن ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔