’اشتعال انگیزکارروائی سے نمٹنے کا منصوبہ‘

آخری وقت اشاعت:  پير 25 مارچ 2013 ,‭ 09:39 GMT 14:39 PST
جنوبی کوریا کے فوجی

حکام کے مطابق نئے منصوبے کے تحت اگر شمالی کوریا کی جانب سے حملے کی صورت میں امریکہ اور جنوبی کوریا مشترکہ کاروائی کریں گے

امریکہ اور جنوبی کوریا نے شمالی کوریا کی’اشتعال انگیز‘کارروائیوں سے نمٹنے کے لیے ایک نئے فوجی منصوبے پر دستخط کیے ہیں۔

حکام کے مطابق نئے منصوبے کے تحت اگر شمالی کوریا کی جانب سے کوئی بھی محدود حملہ ہوتا ہے تو جنوبی کوریا اور امریکہ اس کا مشترکہ جواب دیں گے۔

امریکہ کے جنوبی کوریا میں اٹھائیس ہزار فوجی تعنیات ہیں لیکن ابھی تک ان امریکی فوجیوں کی خدمات صرف چھوٹی موٹی کارروائیوں تک ہی محدود ہیں۔

جنوبی کوریا کی وزارتِ دفاع کے ترجمان کم من سیوک نے پیر کو ایک بیان میں کہا ہے ’نیا فوجی منصوبہ اس بات کی اجازت دیتا ہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے اشتعال انگیز کارروائی کی صورت میں امریکہ اور جنوبی کوریا اس کا مشترکہ طور پر جواب دے گے۔ جوابی کارروائی کی قیات جنوبی کوریا کرے گا لیکن اس کو امریکہ کی مدد حاصل ہوگی۔‘

وزارتِ دفاع کے ترجمان کا اس معاہدے کے بارے میں مزید کہنا تھا ’اس منصوبے کا اثر یہ ہوگا کہ شمالی کوریا ہمیں دھمکیاں دینا بند کر دے گا۔‘

اس منصوبے کے تحت شمالی کوریا کی جن ’اشتعال انگیز‘ کارروائیوں سے نمٹا جائے گا اس میں سرحد پر دارندازی، اور سرحدی جزیروں پر حملے شامل ہیں۔

واضح رہے کہ شمالی اور جنوبی کوریا کے تعلقات درمیان گزشتہ کچھ مہینوں سے کشیدہ ہیں اور وہ ایک دوسرے پر اشتعال انگیز کارروائیوں کے الزامات لگاتے رہے ہیں لیکن گزشتہ ماہ شمالی کوریا کی جانب سے تیسرے جوہری تجربے کے بعد خطے میں کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔

سیول میں موجود بی بی سی کی نامہ نگار لوسی ولیم سن کا کہنا ہے کہ نئے منصوبے کے تحت جنوبی کوریا شمالی کوریا کی جانب سے حملے یا حملے کی دھمکیوں کی صورتحال میں امریکہ کی مدد حاصل کر سکتا ہے۔

واضح رہے کہ حالیہ دنوں میں شمالی کوریا نے جنوبی کوریا کے جزیرے پر حملے کی دھمکی دی ہے جس کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات مزید کشیدہ ہوئے ہیں۔

واضح رہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے بارہ فروری کو کیے جانے والے جوہری تجربے کے بعد اقوام متحدہ نے اس پر نئی پابندیاں عائد کی ہیں۔

شمالی کوریا نے اقوام متحدہ کی ان پابندیوں اور امریکہ اور جنوبی کوریا کے نئے فوجی معاہدے کی سخت الفاظ میں مخالفت کی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔