افغانستان: خودکش حملے میں پانچ پولیس اہلکار ہلاک

آخری وقت اشاعت:  منگل 26 مارچ 2013 ,‭ 06:25 GMT 11:25 PST
جلال آباد حملہ (فائل فوٹو)

اس سے قبل دسمبر میں ہوئے حملے میں چار افغان فوجی مارے گئے تھے اور متعد نیٹو فوجی زخمی ہوئے تھے

افغانستان کے مشرقی شہر جلال آباد میں ایک خود کش حملے میں پانچ پولیس اہلکار ہلاک جبکہ چار زخمی ہو گئے ہیں۔

افغان حکام نے بی بی سے کو بتایا کہ یہ حملہ صوبہ ننگرہار کے ایک پولیس مرکز پر کیا گیا تھا۔

افغان پولیس کے ایک ترجمان نے بی بی سی کو بتایا: ’اسلحے سے لیس سات خودکش حملہ آوروں نے ننگرہار کے پولیس ہیڈ کوارٹر کو نشانہ بنایا۔‘

انھوں نے کہا کہ سب سے پہلے ایک حملہ آور نے آتش گیر مادے سے بھری ایک گاڑی کو اڑا دیا۔

انھوں نے مزید کہا کہ تین حملہ آور پولیس کے ہاتھوں مارے گئے لیکن تین دوسرے حملہ آور پولیس ہیڈ کوارٹر میں داخل ہونے میں کامیاب ہوگئے اور انھوں نے اپنی خودکش بیلٹ کو دھماکے سے اڑا دیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ اب ختم ہو گیا ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق طالبان کا کہنا ہے کہ حملے کا ہدف غیرملکی اور اسرائیلی اساتذہ تھے جو افغان پولیس کو جلال آباد بیس میں تربیت دے رہے تھے۔

اس سے قبل دسمبر میں جلال آباد میں طالبان نے امریکی اور افغان کے مشترکہ ایئر بیس کو نشانہ بنایا تھا جس میں چار افغان فوجی ہلاک ہوئے تھے اور کئی نیٹو افواج کے اہلکار زخمی ہوئے تھے۔

واضح رہے کہ جلال آباد ننگرہار صوبے کا دارالحکومت ہے۔

یہ حملہ اس دوران کیا گیا ہے جب امریکی وزیرِ خارجہ جان کیری افغانستان کے دورے پر ہیں۔ جان کیری مشرق وسطیٰ سے افغانستان کے غیر اعلانیہ دورے پر اچانک کابل پہنچے تھے۔

اس موقعے پر صدر کرزئی نے اپنے ایک خطاب کی وضاحت کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ دراصل یہ کہنا چاہتے تھے کہ اگر طالبان واقعی غیر ملکی افواج کو ملک سے باہر نکالنا چاہتے ہیں تو انھیں لوگوں کا قتلِ عام بند کر دینا چاہیے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔