چین: بڑڈ فلو سے پانچ ہلاکتیں

چین میں ایوین فلو وائرس ایچ سیون این نائن کے گیارہ واقعات سامنے آئے ہیں جس سے پانچ افراد ہلاکت ہو چکی ہے۔

اس سے پہلے ایوین فلو جسے عرف عام برڈ فلو بھی کہا جاتا ہے، کا یہ وائرس کی انسان میں نہیں دیکھا گیا۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیش نے کہا ہے کہ ابھی اس وائرس کے ایک انسان سے دوسرے انسان میں منتقل ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔

لیبارٹری ٹیسٹوں سے پتہ چلا ہے کہ ایوین فلو کی اس قسم ایچ سیون این نائن پر اینٹی بائیوٹک ٹامی فلو اور ری لیزا دوائی سے قابو پانا ممکن ہے۔

چین میں چار سو ایسے لوگوں کی کڑی نگرانی ہو رہی ہے جن کا وائرس کا شکار ہونے والے گیارہ افراد سے کوئی تعلق رہا ہے۔

چین کی حکومت نے بیماری کے پھیلاؤ کے روکنے کے وسیع پیمانے پر اقدامات کیے ہیں۔ حکومت نے ایک ٹاسک فورس قائم کی ہے جو اس بیماری کی وجوہات کا پتہ چلانے کی کوشش کر رہی ہے۔

چین کی حکومت نے لوگوں سے کہا ہے کہ وہ صفائی ستھری کے بنیادی اصولوں پر سختی سے عمل پیرا ہوں اور مردہ جانورں کو چھونے سے پرہیز کریں۔

ورلڈ ہیلتھ آرکنائزیشن نے ابھی تک چین میں سفر سے متعلق کوئی ہدایت نامہ جاری نہیں کیا ہے۔

اسی بارے میں