اٹلی:نئی حکومت قائم، وزیر اعظم ہاؤس کےباہر فائرنگ

اٹلی میں دو ماہ قبل ہونے ہونے والے انتخابات کے منقسم نتائج کے بعد سیاستدان بالآخر ایک نئی اتحادی حکومت قائم کرنے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔

نئی حکومت کی حلف وفاداری کے موقع پر ایک شخص نے وزیر اعظم ہاؤس میں گھس کر سیاستدانوں کی ہلاک کرنے کی کوشش کی ہے۔

پولیس نے کہا ہے کہ جب انچاس سالہ لویجی پریٹی وزیر اعظم ہاؤس میں داخل نہ ہو سکا تو اس نے فائرنگ کر کے دو پولیس اہلکاروں کو شدید زخمی کر دیا ہے۔

پولیس کے مطابق انچاس لویجی پریٹی سیاستدانوں سے ناراض تھا اور وہ انہیں ہلاک کرنے کی نیت سے وزیر اعظم میں داخل ہونا چاہتا تھا۔

اٹلی کے دارلحکومت روم میں نئی اتحادی حکومت نے حلف لے لیا ہے۔ تقریبِ حلف برداری صدارتی محل میں ہوئی۔ ڈیموکریٹک پارٹی کے نائب اور حکومت میں شامل اتحادی جماعتوں کے سربراہ اینرکولیٹا نئی کابینہ میں وزیراعظم کا عہدے پر فائز ہوئے ہیں۔ اس حکومتی اتحاد میں سابق وزیراعظم سلویو برلسکونی کی جماعت پیپلز فریڈیم پارٹی بھی شامل ہیں۔

اٹلی میں نئی حکومت کے حلف برداری کے بعد گزشتہ دو ماہ سے جاری رہنے والا سیاسی تنازعہ ختم ہو گیا ہے۔

دوسری جانب تقریبِ حلف برداری سے چند کلومیٹر کے فاصلے پر واقع وزیراعظم کے دفتر کے باہر فائرنگ کے ایک واقعے میں دو پولیس اہلکار زخمی ہو گئے ہیں۔ زخمی ہونے والے ایک پولیس اہلکار کی حالت تشویشناک ہے۔ اس واقعے کے بعد پولیس نے ایک شخص کو حراست میں لیا ہے۔ استغاثہ کے مطابق حراست میں لیے گئے شخص نے اعتراف کیا ہے کہ وہ سیاست دانوں کو نشانہ بنا رہا تھا جن کی وجہ سے اُسے ملازمت سے ہاتھ دھونا پڑا۔

ملک میں تشکیل پانے والی نئی کابینہ میں خواتین کی تعداد معمول سے زیادہ ہے جس میں یورپی یونین میں خارجہ اُمور کی سابق کمشنر ایما بونینو بھی شامل ہیں۔ نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ حکومتی اتحاد میں اٹلی کی دائیں اور بائیں بازوں کی جماعتوں کی شمولیت غیر معمولی ہے۔ اور حکومت میں دونوں جماعتوں کی شمولیت اس اتحاد کو مشکل بنا سکتاہے۔

اٹلی کے سابق وزیراعظم سلویو برلسکونی نئی کابینہ میں وزیر نہیں ہیں لیکن انھوں نے اپنی جماعت سے منسلک افراد کو اہم منصب دیئے ہیں۔ پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے سیکرٹری ایلفانو نئی حکومت میں نائب وزیراعظم اور وزیر داخلہ کا عہدہ سنھبالیں گے اور اُن کا شمار سلویو برلسکونی کے قریبی ساتھیوں میں ہوتا ہے۔

ہفتے کواٹلی کے صدر نیپلیتانو نے کہا ہے کہ نئی حکومت کو دونوں ایوانوں کی حمایت حاصل ہے۔ انھوں نے کہا کہ’مجھے اُمید ہے کہ نئی حکومت تعاون کی فضا میں جلد کام کر سکے گی۔اور یہ واحد ممکنہ حکومت ہو سکتی تھی۔‘

اٹلی کی دارلحکومت روم میں بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ گزشتہ حکومت کی کفایت شعاری کے اقدامات کے باوجود نئی حکومت کو معشیت زبوں حالی، بڑھتی ہوئی بےروزگاری جیسے مسائل کا سامنا ہے۔