2028 تک بھارت کی آبادی دنیا میں سب سے زیادہ

اقوامِ متحدہ نے کہا ہے کہ 2028 میں بھارت چین کو پیچھے چھوڑ کر آبادی کے لحاظ سے دنیا کا سب سے بڑا ملک بن جائے گا۔

اس وقت دنوں ملکوں کی آبادی ایک ارب 45 کروڑ ہو گی، جس کے بعد سے بھارت کی آبادی بڑھتی جائے گی جب کہ چین کی آبادی آہستہ آہستہ کم ہو گی۔

اقوامِ متحدہ کا تخمینہ ہے کہ دنیا کی حالیہ آبادی جو سات ارب 20 کروڑ ہے، وہ 2050 میں نو ارب 60 کروڑ ہو جائے گی۔

س تخمینے میں آبادی بڑھنے کی شرح پہلے سے کیے گئے اندازوں سے زیادہ ہے۔

اقوامِ متحدہ کا کہنا ہے کہ آبادی زیادہ تر ترقی پذیر ملکوں، خاص طور پر افریقہ میں میں بڑھے گی۔

دنیا کے 49 سب سے کم ترقی یافتہ ممالک کی آبادی 2013 میں 90 کروڑ سے بڑھ کر 2050 میں ایک ارب 80 کروڑ ہو جائے گی، جب کہ ترقی یافتہ ممالک کی آبادی بڑی حد تک جوں کی توں رہے گی۔

اقوامِ متحدہ کا کہنا ہے کہ آبادی کی شرح کے تخمینے میں اضافے کی وجہ زیادہ شرحِ پیدائش والے ممالک سے نئی معلومات کی فراہمی ہے۔

چین، بھارت، برازیل جیسے بڑے ترقی پذیر ممالک میں فی عورت بچوں کی شرح میں تیزی سے کمی آئی ہے، لیکن نائجیریا، نائجر، ایتھیوپیا اور یوگینڈا جیسے ملکوں میں یہ شرح اب بھی بلند ہے۔

صدی کے وسط تک نائجیریا کی آبادی امریکہ کے برابر ہو جائے گی، اور 2100 تک چین کے برابر آ جائے گی۔

چین کی آبادی 2030 کے بعد گھٹنا شروع ہو جائے گی۔

اقوامِ متحدہ کی معاشی اور سماجی امور کے انڈر سیکریٹری وو ہونگبو نے کہا: ’اگرچہ دنیا کی آبادی میں اضافے کی شرح میں بحیثیتِ مجموعی کمی واقع ہو رہی ہے، یہ رپورٹ ہمیں یاد دلاتی ہے کہ بعض ترقی پذیر ممالک، خاص طور پر افریقہ میں، کی آبادی اب بھی تیزی سے بڑھ رہی ہے۔‘

اقوامِ متحدہ ہر دو سال کے بعد دنیا کی ماضی کی، حالیہ اور مستقبل کی آبادی کا تخمینہ جاری کرتی ہے۔

جمعے کو شائع ہونے والی اس رپورٹ میں 233 ملکوں سے اعداد و شمار حاصل کیے گئے۔

اسی بارے میں