شام کے چھ مقامات عالمی ورثے کی فہرست میں

اقوام متحدہ کے ادارے یونیسکو نے شام میں مزید چھ تاریخی مقامات کو جاری مسلح تصادم سے خطرے کے باعث عالمی ورثے کی فہرست میں شامل کر لیا ہے۔

یونیسکو نے اس مقامات کو فہرست میں شامل کرنے کا فیصلہ کمبوڈیا میں ہنے والے سالانہ اجلاس میں کیا۔

یونیسکو کا کہنا ہے کہ اس کو امید ہے کہ اس فیصلے کے بعد عالمی سطح پر اس کی حمایت کی جائے گی۔

واضح رہے کہ شام میں مسلح تصادم کے باعث ملک کے کئی تاریخی مقامات کو نقصان اور لوٹے جانے کا خدشہ ہے۔

شام میں ہزار سال پرانا مینار تباہ

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق شام میں قدیم مقامات کو نقصان پہنچے جانے کی اطلاعات غیر مصدقہ ہیں۔ یہ معلومات یا تو سوشل میڈیا سے ملی ہیں یا پھر شامی حکومت سے جس کی تصدیق نہیں کرائی جا سکی۔

یونیسکو کے مطابق حلب کے قدیم شہر میں شدید لڑائی کی وجہ سے کافی نقصان پہنچا ہے۔

یاد رہے کہ اپریل میں اُمیہ مسجد کے گیارہویں صدی کا مینار تباہ ہو گیا تھا۔

جن مقامات کو عالمی ورثے کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے وہ یہ ہیں:

دمشق کا قدیم شہر

بصری کا قدیم شہر

حلب کا قدیم شہر

تدمر

حمص کے قلعے

اور شمالی شام کے قدیمی گاؤں

اسی بارے میں