انڈونیشیا میں زلزلے سے بائیس افراد ہلاک

Image caption انڈونیشیا کے صوبے آچے میں آنے والے زلزلے کے بعد آمدادی آپریشن شروع کر دیا گیا ہے

انڈونیشیا میں حکام کے مطابق ملک کے مغربی جزیرے سماٹرا میں آنے والے زلزلے میں کم سے کم بائیس افراد ہلاک اور 200 سے زائد زخمی ہو گئے۔

حکام کے مطابق منگل کو ریکٹر سکیل پر زلزلے کی شدت چھ اعشاریہ ایک ریکارڈ کی گئی۔

انڈونیشیا کے صوبے آچے میں آنے والے زلزلے کے بعد آمدادی آپریشن شروع کر دیا گیا ہے۔ زلزلے کی وجہ سے متعدد مکانات زمین بوس ہو گئے۔

ایک اطلاع کے مطابق انڈونیشیا کے مرکزی صوبے آچے میں واقع ایک مسجد گرنے کے نتیجے میں چھ بچے ہلاک اور چودہ افراد ملبے کے نیچے دب گئے۔

انڈونیشیا کے قدرتی آفات سے نمبٹنے کے ادارے کے ترجمان کے مطابق زلزلے میں اب تک 22 افراد ہلاک اور 210 سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں۔

انڈونیشیا کے قدرتی آفات سے نمبٹنے کے ادارے کے ایک اہلکار سبحان نے خبر رساں ایجسنی اے ایف پی کو بتایا کہ امدادی ٹیمیں ملبے تلے دبے بچوں کو نکالنے کی کوششیں کر رہی ہیں۔

انڈونیشیا کے حکام کا کہنا ہے کہ فوجیوں اور پولیس کو متاثرہ علاقوں میں تعینات کر دیا گیا گیا تاہم لینڈ سلائیڈنگ کے باعث راستے بند ہو جانے سے انھیں مشکلات کا سامنا ہے۔

ادھر انڈونیشیا کی ایئر فورس نے امدادی کاموں کے لیے ایک جہاز اور ہیلی کاپٹر بھیج دیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ زلزلے کے جھٹکے 15 سیکنڈز تک محسوس کیے گئے۔ حکام کے مطابق صوبے آچے کے علاقائی دارالحکومت بندہ آچے، میراں اور بینر سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔

انڈونیشیا میں اس سے پہلے بھی شدید زلزلے آتے رہے ہیں۔ دسمبر 2004 میں اسی علاقے میں نو اعشاریہ ایک شدت کے زلزلے کے بعد بحرہ ہند میں شدید سونامی آئی تھی جس سے بھارت، سری لنکا سمیت تیرہ ممالک متاثر ہوئے تھے اور ڈھائی لاکھ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

اسی بارے میں