پوتن کے ناقد کو پانچ سال کی سزا

Image caption الکسی نوالنی نے عدالت میں ہتھکڑیاں لگائے جانے سے پہلے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں لوگوں سے کہا کہ وہ ہاتھ پر ہاتھ رکھ کر بیٹھنے کی بجائے کچھ نہ کچھ کرتے رہیں۔

روس کی ایک عدالت نے صدر ولادیمر پوتن کےسیاسی مخالف الکسی ناوالنی کو غبن کے الزام میں پانچ سال قید کی سزا سنائی ہے۔

مسٹر نوالنی الزامات کی تردید کرتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ان کے خلاف مقدمے کے سیاسی مقاصد ہیں۔

یورپی یونین نے الکسی نوالنی کو سزا دیئے جانے کے فیصلے پر تنقید کی ہے۔ یورپی یونین نے کہا ہے کہ عدالتی فیصلے سے روسی قانون کے بارے میں کئی سوالات جنم لیتے ہیں۔

امریکہ نے کہا ہے کہ اسے اس فیصلے سے سخت مایوسی ہوئی ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی اس عدالتی فیصلے کو مذاق قرار دیا ہے۔

سینتیس سالہ الکسی نوالنی صدر پوتن کی جماعت رشیا پارٹی کے ناقدین میں سے ایک ہیں اور ملک میں کرپشن کے بارے میں اپنی آواز بلند کرتے رہتے تھے۔

الکسی نوالنی نے عدالت میں ہتھکڑیاں لگائے جانے سے پہلے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں لوگوں سے کہا کہ وہ ہاتھ پر ہاتھ رکھ کر بیٹھنے کی بجائے کچھ نہ کچھ کرتے رہیں۔

الکسی نوالنی نے حال ہی میں ماسکو کے میئر کے انتخاب کے اپنے آپ کو ایک امیدوار رجسٹر کروایا تھا۔