سنوڈن کو پناہ: اوباما نے پوتن سے ملاقات منسوخ کر دی

Image caption امریکہ نے ہمیشہ روس کے ساتھ مطلوب افراد کی حوالگی کا معاہدہ کرنے سے انکار کیا ہے: روسی مشیر

امریکی صدر براک اوباما نے سی آئی اے کے سابق اہلکار کو روس میں پناہ دیے جانے کے بعد روسی صدر ولادی میر پوتن سے اپنی ملاقات کو منسوخ کر دیا ہے۔

روس نے امریکی فیصلے پر مایوسی کا اظہار کیا ہے۔ روس نے کہا ہے کہ امریکی فیصلے سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ روس کے ساتھ برابری کی بنیاد پر تعلقات قائم کرنے کا خواہاں نہیں ہے۔

سنوڈن کی درخواست، اوباما کا پوتن کو فون

ایڈورڈ سنوڈن کا پناہ دینے پر روس کا شکریہ

امریکی صدر نے کہا ہے کہ سی آئی اے کے سابق اہلکار ایڈورڈ سنوڈن کو روس میں پناہ دیے جانے سے انہیں سخت مایوسی ہوئی ہے۔

البتہ امریکی صدر ستمبر میں روسی شہر پیٹرزبرگ میں جی ٹوئنٹی ممالک کے اجلاس میں شرکت کریں گے۔

ادھر وائٹ ہاؤس کے ایک مشیر نے کہا ہے کہ ایڈورڈز سنوڈن کو پناہ دینے کے بعد امریکہ اور روس کے مابین پہلے سے پائی جانی والی خلیج اب مزید گہری ہوگئی ہے۔

روسی دفتر خارجہ کے ایک مشیر یوری اسکوف نے کہا ہے کہ ایڈورڈ سنوڈن کے معاملے میں روس کا کوئی کردار نہیں ہے اور اس کے لیے روس کو مورد الزام نہیں ٹہرایا جا سکتا ہے۔

روسی وزارت خارجہ کے مشیر نے کہا ہے امریکہ نے ہمیشہ روس کے ساتھ مطلوب افراد کی حوالگی کا معاہدہ کرنے سے انکار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ روس کے خلاف جرائم میں شریک لوگوں کو امریکہ میں پناہ ملی ہے اور جب روس نے ان افراد کو حوالے کرنے کا مطالبہ کیا تو امریکہ نے ہمیشہ منفی میں جواب دیا ہے۔

امریکی وائٹ ہاؤس کے ترجمان نے کہا ہے کہ موجودہ حالات میں روس کے ساتھ سربراہی ملاقات کو معطل کرنا زیادہ مثبت قدم ہے۔

امریکی اور روس کے صدور کی آخری ملاقات رواں برس جون میں ہوئی تھی۔

اسی بارے میں